سکیورٹی فورسز کے مبینہ دباؤ میں آکر خودکشی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption انسانی حقوق کی تنظیموں نے حکومت پر مخالفین کو نشانہ بنانے کا الزام عائد کیا ہے

ازبکستان میں ایک خاتون نے سکیورٹی فورسز کے مبینہ دباؤ میں آکر خودکشی کرلی ہے۔

اطلاعات ہیں کہ سکیورٹی فورسز خاتون کو مبینہ طور پر مجبور کررہی تھیں کہ وہ حزبِ اختلاف کے ایک اہم رہنماء کو قتل کرے جو جرمنی میں جلاوطنی کی زندگی گزار رہے ہیں۔

کلثوموئے عبدالجلیلوف جرمنی میں ہی تعلیم حاصل کررہی تھیں اور ان دنوں وہ اپنے ملک چھٹیاں گزارنے آئی تھیں کہ ان سے خفیہ اداروں کے اہلکاروں نے پوچھ گچھ کی۔

خودکشی کرنے سے پہلے لکھی گئی اپنی ایک تحریر میں انہوں نے کہا ہے کہ وہ دوسروں کی زندگی لینے سے اپنی زندگی کو ختم کرنا بہتر سمجھتی ہیں۔

ازبکستان میں انسانی حقوق کے گروپوں نے صدر اسلام کریموف کی حکومت پر الزام لگایا ہے کہ وہ منظم انداز میں اپنے حریفوں کو نشانہ بنا رہی ہے۔

رواں برس کے شروع میں جرمنی کے شہر برلن میں چند منحرف گروپوں نے ازبک پپلز موومنٹ نامی ایک تحریک بھی تشکیل دی تھی۔