مصر: انتخابات کے دوسرے مرحلے کا آغاز

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption فروری میں سابق صدر حسنی مبارک کی معزولی کے بعد یہ پہلے انتخابات ہیں

مصر میں پارلیمانی انتخابات کے دوسرے مرحلے کا آغاز ہو گیا ہے جس میں اسلامی جماعتوں کو حاصل برتری برقرار رہنے کی توقع ہے۔

بدھ کو انتخابی عمل قدرے پرامن رہا اور دھاندلی کے کسی بڑے واقع کی اطلاعات موصول نہیں ہوئیں ہیں۔

اس ہفتے دیہی اور قدامت پسند علاقوں میں پولنگ ہونے کے بعد مذہبی پارٹیوں کی پوزیشن بہتر ہونے کی توقع ہے۔

پہلے مرحلے کی طرح اس بار بھی پولنگ سٹیشنز کے بار علی الصبح قطاریں لگ گئیں تاہم انتخابی عمل پر نظر رکھنے والے مبصرین کے ایک گروپ کا کہنا ہے کہ پولنگ سٹیشنز پر لوگوں کی بڑی تعداد صرف دو صوبوں غیزہ اور بہیرا تک محدود رہی۔

لیکن سپریم جوڈیشل کمیٹی کے مطابق پہلے مرحلے کے برعکس بدھ کو تمام پولنگ سٹیشن وقت پر کھلے گئے۔

ریاستی ٹی وی چینل کے مطابق غیزہ صوبے میں ایک پولنگ سٹیشن حریف امیدواروں کے درمیان فائرنگ کے باعث تین گھنٹے کے لیے بند کر دیا تھا۔

اس واقعے میں کسی ہلاکت کی خبر نہیں آئی البتہ سات لوگوں کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

قاہرہ سے مشرق میں واقع سوئز شہر میں بھی حریف اسلامی امیدواروں کے درمیان فائرنگ کی اطلاعات موصول ہوئیں ہیں۔

غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق اس واقعے میں ایک شخص شدید زخمی ہوا ہے۔

اس مہینے کے آغاز میں منعقد ہونے والے انتخابات کے پہلے مرحلے میں مذہبی جماعتیں کامیاب رہیں۔

ووٹوں کا ایک تہائی حصہ اسلامی جماعت اخوان المسلمین کے حق میں ڈالا گیا۔

انتخابات کا یہ طویل اور پیچیدہ عمل اگلے مہینے جنوری میں مکمل ہو گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption انتخابات کا دوسرا مرحلہ جمعرات اور جمعہ کو نو صوبوں میں جاری رہے گا

انتخابات کا مقصد پارلیمنٹ کے ایوان زیریں کا انتخاب ہے جو کہ سو اراکین پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دی گی جو ملک کا نیا آئین مرتب کرے گی۔

مصر کے پیچیدہ انتخابی نظام کے تحت، پیپلز اسمبلی یعنی پارلیمان کی 498 نشستوں میں سے دو تہائی، متناسب نمائندگی کے اصول پر پارٹیوں اور ان کے اتحادیوں کی تیار کردہ فہرستوں کی مدد سے منتخب کی جائیں گی۔

باقی نشستوں پر سب سے پہلے پچاس فیصد ووٹ لینے والے کو کامیاب قرار دیا جائے گا۔

اخوان المسلمین نے پہلے مرحلے میں چھتیس اعشاریہ چھ فیصد ووٹ حاصل کیے اور انہوں نے چھپن میں سے بتیس سیٹیں جیتنے کا دعویٰ کیا ہے جبکہ چار نشستیں ان کے اتحادیوں نے جیتی ہیں۔

انتخابات کا دوسرا مرحلہ جمعرات اور جمعہ کو نو صوبوں میں جاری رہے گا جن میں دارالحکومت قاہرہ کے نواحی علاقےاور دریائے نیل کے ڈیلٹا کے گرد دیہی علاقے شامل ہیں جو کہ روایتی طور پر اسلامی جماعتوں کے مضبوط گڑھ رہے ہیں۔

اسی بارے میں