لبنان: عمارت گرنے سے پچیس ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ اب تک معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ عمارت کے اچانک انہدام کی وجہ کیا تھی

لبنان کے دارالحکومت بیروت میں ایک پانچ منزلہ عمارت زمین بوس ہونے سے کم سے کم پچیس افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

شہر کے ضلع اشرفیہ میں امدادی کارکن کا کہنا ہے کہ وہ اُن سولہ افراد کو تلاش کرنے کی کوشش کررہے ہیں جو ان کے خیال میں اب بھی ملبے تلے دبے ہیں۔

اس عمارت میں کم سے کم پچاس افراد رہائش پذیر تھے جن میں زیادہ تر غیرملکی تھے جو لبنان میں روزگار کے لیے آئے تھے۔

خبر رساں ادارے اے پی نے سرکاری اہلکاروں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں آٹھ سوڈانی، دو فلپائنی، اور دو اردن کے باشندے شامل ہیں۔

یہ اب تک معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ عمارت کے اچانک انہدام کی وجہ کیا تھی۔

آٹھ افراد اس لمحے بچ گئے جب عمارت گری تھی۔ ایک عینی شادہ نے مقامی ٹی وی چینل کو بتایا ’وہ سماں ایک زلزلے جیسا تھا جب عمارت نیچے گر رہی تھی۔‘

لبنان کے صدر مشل سلیمان نے اتوار کی شام عمارت گرنے کے بعد متاثرہ جگہ کا دورہ کیا۔

وزیرِ داخلہ مروان شربل نے اپنے دورے کے دوران صحافیوں کو بتایا کہ حکام عمارت کے مالک سے پوچھ گچھ کررہے ہیں۔

ان کے بقول اب یہ ضروری ہوگیا ہے کہ اس طرح کی عمارتوں کا ملک بھر میں ایک سروے کرایا جائے جن میں کئی عمارتیں تو ایسی ہیں جو غیر قانونی طور سے تعمیر کی گئی ہیں یا پھر ان میں مطلوبہ اجازت کے بغیر کئی منازل تعمیر کردی گئی ہیں۔

اسی بارے میں