اسرائیلی فوج کے ہاتھوں حماس کے رہنماء گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اسرائیل نے ڈاکٹر عزیزالدویک کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے

اسرائیلی فوج نے فلسطین کے سینئیر سیاستدان اور حماس کے رکن کو غربِ اردن میں گرفتار کرلیا ہے۔

خبر رساں ادارے نے ان کے چیف آف سٹاف کے حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ڈاکٹر عزیزالدویک فلسطینی قانون ساز کونسل کے سپیکر ہیں جنہیں ایک چیک پوائنٹ سے گرفتار کیا گیا۔

بہا یوسف کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر عزیزالدویک کی گرفتاری جبع کے مقام پر ہوئی جو یروشلم اور رام اللہ کے درمیان واقع ہے۔ وہ اپنی گاڑی میں ہیبرون کی جانب جارہے تھے۔

اسرائیل نے ان کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے۔ اسرائیلی سرحدی فوج کا کہنا تھا کہ انہیں دہشت گردی کی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

اس واقعہ کے عینی شاہدین نے فلسطینی خبر رساں ادارے کو بتایا کہ اسرائیلی فوج نے ڈاکٹر عزیزالدویک کو ایک نامعلوم مقام لے جانے سے پہلے ہتھکڑیاں لگائیں اور ان کی آنکھوں میں پٹی باندھی۔

وہ فلسطینی عسکریت پسند تنظیم حماس کے رکن ہیں جس کی فلسطینی علاقے غزہ پر حکومت ہے۔ ڈاکٹر عزیزالدویک غربِ اردن میں رہائشی ہیں۔

سنہ دو ہزار سات میں حماس نے فتح پارٹی کو غزہ میں شکست دے دی تھی جس کے بعد سے فلسطینی پارلیمان کو اجلاس ہی نہیں بلایا گیا ہے۔

اسی بارے میں