افغانستان: پولیس کے صدر دفتر پردھماکہ، سات ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

افغانستان کے جنوبی شہر قندھار میں ایک بڑا دھماکہ ہوا ہے جس میں کم از کم سات افراد ہلاک اور انیس زخمی ہو گئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں پانچ پولیس اہلکار اور دو شہری ہیں۔

یہ دھماکہ پولیس کے دفتر پر کھڑی ایک گاڑی میں ہوا ہے جہاں سے پولیس کا صدر دفتر بھی قریب ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ابھی تک کسی نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے تاہم امدادی سرگرمیاں شروع کردی گئی ہیں اور زخمیوں کو ہسپتال روانہ کیا جار ہا ہے۔

صوبائی حکومت نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوٹر پر درج کیا ہے کہ یہ دھماکہ ایک خریداری کے مرکز کے قریب ہوا۔

شائدانو چوک نامی ایک مقامی شخص نے بی بی سی کو بتایا کہ’ یہ دھماکہ بہت بڑا تھا جس سے کھڑکیاں ہل کر رہ گئیں۔ دھماکے کے بعد کچھ دیر کے لیے گولیوں کے چلنے کی آواز بھی آتی رہیں۔‘

اطلاعات کے مطابق ہلاک اور زخمی ہونے والے افراد میں بچے بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ قندھار افغانستان کا دوسرا سب سے بڑا شہر ہے۔

بی بی سی کے بلال سروری کے مطابق گزشتہ سالوں میں اس شہر میں بہت خون خرابہ ہوا ہے اور پولیس کے صدر دفتر پر اس سے پہلے بھی حملہ ہو چکا ہے۔ ہمارے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ حال میں سکیورٹی کے انتظامات بہتر ہونے کی وجہ سے قندھار میں حالات پہلے کی نسبت بہتر ہو گئے ہیں۔

اسی بارے میں