لیبیا:قذافی کا بیٹا بغاوت پر آمادہ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption کرنل قذافی کی ہلاکت سے قبل ہی سعدی قذافی نائیجر چلے گئے تھے

لیبیا کے مرحوم رہنما کرنل قذافی کے بیٹے، سعدی قذافی نے دھمکی دی ہے کہ وہ برسرِ اقتدار عبوری کونسل کے خلاف بغاوت کریں گے۔

انہوں نے یہ بات نائیجر میں ایک ٹی وی انٹرویو میں کہی۔ سعدی نے اپنے والد کے اقتدار کے خاتمے کے بعد نائیجر میں پناہ حاصل کی تھی۔

سعدی قذافی نے کہا کہ لیبیا میں ان کے بہت سے حامی اب بھی موجود ہیں اور ان میں سے کئی کا تعلق برسرِاقتدار کونسل سے ہے۔

کرنل قذافی جنہوں نے لیبیا پر چار عشروں تک حکومت کی تھی، گزشتہ برس اکتوبر میں کئی ماہ جاری رہنے والی خانہ جنگی کے بعد ہلاک کر دیے گئے تھے۔

بی بی سی کے نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اگرچہ، عبوری حکومت کو بغاوت کا خدشہ رہتا ہے لیکن یہ امکان کم ہے کہ سعدی قذافی ایسی کسی بغاوت کی قیادت کریں گے۔

العربیہ ٹی وی کو ٹیلیفون پر انٹرویو دیتے ہوئے سعدی قذافی نے کہا وہ فوراً لیبیا واپس جانا چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ریاست کے چھوٹے چھوٹے حصوں میں سے اٹھنے کے بعد، ایک بڑی بغاوت ہو گی۔ جنوب سے شروع ہونے کے بعد یہ بغاوت، مشرقی، وسطی اور مغربی حصوں میں پھیلے گی‘۔

انہوں نے کہا کہ وہ قذافی خاندان کے دیگر ارکان، فوج، مسلح ملیشیا اور این ٹی سی کے حکام سے مسلسل رابطے میں ہیں۔

اسی بارے میں