چیچنیا: سترہ روسی فوجی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption روس دو مرتبہ چیچنیا کے باغیوں سے جنگ کر چکا ہے

چیچنیا اور داغستان کے سرحدی علاقوں میں گزشتہ چار روز کے دوران اسلامی شدت پسندوں کے حملوں میں روس کے سترہ فوجیوں سمیت چوبیس افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

روسی ذرائع ابلاغ کے مطابق وزیر داخلہ رشید نورگلیو نے صدر دمتری میدوی ایدف کی بتایا ہے کہ مزاحمت کارروں نے چھپ کر سکیورٹی اہلکاروں پر حملہ کیا۔ سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق حملے میں چوبیس اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں۔

گزشتہ ایک عشرے سے کوہ قاف کے ملکوں، داغستان ، چیچنیا اور انگشتیا میں روس سے آزادی کے لیے مزاحمت جاری ہے۔

روسی فوجیں دو بار چیچن باغیوں کے خلاف جنگ لڑ چکے ہیں۔ چیچنیا میں ماسکو کے حمایت یافتہ صدر رمضان قادروف نے روسی فوج اور باغیوں کے مابین جنگ کے دوران ہونے والی تباہی کو قدرے کم کر دیا ہے لیکن باغی انگشتیا اور داغستان میں تواتر کے ساتھ سرکاری املاک پر حملہ آور ہوتے رہتے ہیں۔

کوہ قاف کے اسلامی باغی اپنے علاقے سے باہر نکل کر بھی کارروائیاں کرتے رہے ہیں اور کئی بار ماسکو میں حملے کر چکے ہیں۔ جنوری 2001 میں ماسکو ہوائی اڈے پر ہونے والے ایک حملے میں تیس سے زیادہ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

.