لبیا میں نسلی فسادات، درجنوں ہلاک

Image caption لیبیا کےمسلح گروہ ملک کے استحکام کے لیے خطرہ بن چکے ہیں: ایمنٹسی انٹرنیشنل

لیبیا کے شہر الکفرا میں عرب اور افریقی نسل گروہوں میں گزشتہ دس دنوں سے جاری لڑائی میں بڑی تعداد میں افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

دارالحکومت طرابلس سے بارہ سو میل فاصلے پر واقع الکفرا میں عرب قبیلے زاوی اور افریقی قبیلے تیبو میں گزشتہ دس روز سےلڑائی جاری ہے۔

کرنل قذافی کی حکومت کے خاتمے کے بعد لیبیا کی عبوری حکومت کو مسلح گروہوں کو کنٹرول کرنے میں دشواری پیش آ رہی ہے اور مختلف گروہ ملک کے مختلف حصوں پر اپنے تسلط قائم کرنے کی کوشش میں مصروف ہیں۔

اطلاعات کے مطابق الکفرا میں عرب قبیلہ زاوی افریقی قبیلے تبیو سے لڑ رہا ہے۔ تیبو قبیلے کو شکوہ ہے کہ معمر قذافی کے دور میں ان سے ناروا سلوک روا رکھا گیا تھا۔

لیبیا کے فوجی سربراہ یوسف المنگوش نے خبر رساں ادارے رائٹر کو بتایا کہ الکفرا میں دور روز پہلے جنگ بندی کروا دی گئی تھی لیکن پیر کے روز نسلی تشدد پھر پھوٹ پڑا۔

انہوں نے کہا کہ اگر الکفرا میں لڑائی بند نہیں ہوتی ہے تو پھر سرکاری افواج کو بھیجا جائے گا۔

گزشتہ ہفتےانسانی حقوق کے ادارے ایمنسٹی انٹرنیشنل کی مسلح ملیشیا ملک کے استحکام کے لیے خطرہ ہیں۔