ویب سائٹ بلاک کرنے پر ایران کی شدید مذمت

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ایران کی جانب سے بلاک کی گئی ’یو کے فار ایرانینز‘ نامی ویب سائٹ کا عکس

تہران نے ایران میں برطانوی دفترِ خارجہ کی ویب سائٹ بلاک کر دی ہے جسے برطانوی وزیر خارجہ نے ایسی سنسر شپ سے تعبیر کیا ہے جو گلا گھوٹنے والی رسی کی طرح تنگ سے تنگ ہوتی جا رہی ہے۔

ویب سائٹ بلاک کرنے پر ایران کی شدید مذمت کی گئی ہے۔

ولیم ہیگ کا کہنا ہے کہ ’یوکے فار ایرانینز‘ ایرانی شہریوں تک رسائی کے لیے چودہ مارچ کو لانچ کی گئی تھی لیکن سترہ مارچ کواسے ایران میں بلاک کر کے رسائی کو ناممکن بنا دیا گیا۔

مسٹر ہیگ نے مزید کہا ہے کہ برطانوی سفارتخانے کی ویب سائٹ کو ایران پہلے ہی دسمبر میں ایرانی شہریوں کے لیے بلاک کر چکا ہے۔

برطانیہ گزشتہ سال تہران میں اپنا سفارتخانہ بند کر چکا ہے اور ایرانی سفارتکاروں ملک سے نکال چکا ہے۔

اسی کارروائی کے بعد سفارتخانے کے عمارت پر حملہ کیا گیا جسے ایرانی حکومت نے ’احتجاجیوں کی مختصر تعداد کا ناقابلِ قبول رویہ‘ قرار دیا تھا۔ تاہم برطانوی سفارتکاروں نے عندیہ دیا تھا کہ حملے میں ریاست کی پشت پناہی کا شامل ہونا بھی محسوس ہوتا ہے۔

اسی بارے میں