پکتیکا: ساتھی کے ہاتھوں نو پولیس اہلکار قتل

تصویر کے کاپی رائٹ AP

افغانستان میں مشرقی صوبے پکتیکا میں ایک پولیس اہلکار نے اپنے نو ساتھیوں کو گولیاں مار کر ہلاک کر دیا ہے۔

افغانستان میں صوبائی پولیس سربراہ دولت خان کے مطابق یہ واقعہ جمعے کے روز یایا خیل نامی ضلعے میں پیش آیا۔

حکام کے مطابق مسلح اہلکار نے جو ایک نچلی سطح کا افسر تھا جس نے اپنے ساتھیوں کو اس وقت گولیاں مار دیں جب وہ لوگ سو رہے تھے۔

ہلاک ہونے والوں میں اس حملہ آور کا ایک افسر اور اس کے دو بیٹے تھے۔

حملے کے بعد اس شخص نے ہلاک ہونے والے اہلکاروں کے ہتھیار قبضے میں لیے اور وہاں سے فرار ہو گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ قتل کی اس واردات کی وجہ تاحال معلوم نہیں ہو سکی تاہم ان کا شبہ ہے کہ اس واقعے کے پیچھے طالبان کا ہاتھ ہے۔

پولیس سربراہ دولت خان کا کہنا ہے ’یہ ایک بزدل شخص تھا۔ اس نے جو کیا وہ طالبان کی سازش ہے۔‘

پکتیکا کا علاقہ پاکستان میں قائم شدت پسند گروپ حقانی نیٹ ورک کا مضبوط گڑھ سمجھا جاتا ہے جس کے القاعدہ اور طالبان کے ساتھ گہرے مراسم ہیں۔

یہ گروپ زیادہ تر امریکی قیادت میں تعینات افواج پر حملے کرتا ہے تاہم کئی مرتبہ انہوں نے افغان فوج اور پولیس پر بھی حملے کیے ہیں۔

تازہ حملے میں ہلاک ہونے والے تمام پولیس اہلکار مقامی گاؤں کے باشندے اور مقامی پولیس کے اہلکار تھے جو مقامی سطح پر سکیورٹی فراہم کرتی ہے۔ ان علاقوں میں افغانستان کی سرکاری پولیس اور فوج کام نہیں کرتی۔

اسی بارے میں