ٹائٹینک کے لیے یونیسکو کا تحفظ

تصویر کے کاپی رائٹ SPL

اقوامِ متحدہ کے ثقافتی ادارے یونیسکو نے سو برس قبل ڈوبنے والے بحری جہاز ٹائٹینک کے ملبے کو تحفظ دینے کا اعلان کیا ہے۔

ادارے کا کہنا ہے کہ اب تک سات سو سے زیادہ غوطہ غور کینیڈا کے ساحل کے قریب سمندر میں چار ہزار میٹر گہرائی میں موجود جہاز کے ملبے کا دورہ کر چکے ہیں اور وہ اپنے ساتھ ملبے میں موجود نوادرات بھی لے گئے ہیں۔

اب جبکہ ٹائٹینک کو غرقاب ہوئے سو برس ہونے کو ہیں، یونیسکو نے اسے دو ہزار ایک کے اس کنونشن کی فہرست میں شامل کر لیا ہے جو زیرآب ثقافتی ورثے کے تحفظ کے لیے بنایا گیا ہے۔

اس معاہدے کا مقصد غیر سائنسی اور غیر اخلاقی مہم جوئی کو روکنا ہے تاہم یہ صرف انہی بحری جہازوں کے ملبوں کو تحفظ دیتا ہے جنہیں غرقاب ہوئے سو سال ہو چکے ہوں۔

یونیسکو کی ڈائریکٹر جنرل ایرینا بوکووا کا کہنا ہے کہ ٹائٹینک کا ڈوبنا ’انسانیت کی یادداشت میں لنگرانداز ہے‘ اور یہ اہم ہے کہ اس جگہ کو محفوظ بنایا جائے جہاں ڈیڑھ ہزار افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

آر ایم ایس ٹائٹینک برطانوی بندرگاہ ساؤتھمپٹن سے امریکی شہر نیویارک تک کے اپنے پہلے ہی سفر کے دوران چودہ اپریل سنہ انیس سو بارہ کو ایک برفانی تودے سے ٹکرا کر ڈوب گیا تھا۔\

اسی بارے میں