امریکہ کے سب سے چھوٹے قصبے کی نیلامی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption امریکی ریاست وائومِنگ کے بفرڈ نامی اس قصبے کی آبادی صرف ایک شخص پر مشتمل ہے۔

امریکہ کا سب سے چھوٹا قصبہ ویتنام کے ایک شخص کو نیلامی میں نو لاکھ امریکی ڈالر میں بیچ دیا گیا ہے۔

امریکی ریاست وائومِنگ کے بفرڈ نامی اس قصبے کی آبادی صرف ایک شخص پر مشتمل ہے۔

ڈان سیمنز واحد شخص ہیں جو اس قصبے میں رہتے ہیں سو انہیں امریکی حکومت نے میئر کے اعزازی عہدے سے بھی نواز رکھا ہے۔

تاہم اب ڈان میئر کا کہنا ہے کہ وہ اس عہدے کو چھوڑ کر امریکہ کی ریاست کولراڈو میں اپنے بیٹے کے پاس جا رہے ہیں۔

اگرچہ اس قصبے کے خریدار کا نام تو نہیں بتایا گیا لیکن کہا گیا ہے کہ نئے خریدار کو ایک تین کمرے کا گھر، ایک سکول، پٹرول سٹیشن اور تھوڑی سی زمین ملی ہے۔

ساٹھ سالہ ڈان سیمنز اس قصبے میں سنہ انیس سو اسی سے مقیم ہیں اور گزستہ سال ان کے بیٹے کے بفرڈ چھوڑنے کے بعد وہ اس قصبے کے واحد رہائشی بن گئے تھے۔

ان کا کہنا تھا ’میں ایک ساتھ خوش اور اداس ہوں۔ لیکن میں اداس ہونے سے زیادہ خوش ہوں کیونکہ میں ہمیشہ سے یہی چاہتا تھا۔‘

انہوں نے کہا ’اب میں اپنی زندگی کا ایک نیا باب شروع کر سکتا ہوں۔‘

اس نیلامی میں پچیس افراد نے حصہ لیا تھا اور ڈان سیمنز کے بقول جیتنے والے شخص کا مقابلہ جن افراد کے ساتھ تھا ان میں سے چند نے اس قصبے سے بہت دور ہونے کے باعث اپنی بولیاں ٹیلی فون کے ذریعے دیں۔