لاشوں کے ساتھ تصویریں، ’غیر انسانی‘ فعل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

افغانستان کے صدر حامد کرزائی نے افغان خود کش حملہ آوروں کی لاشوں کے ساتھ امریکی فوجیوں کے تصویریں اتروانے کو ایک غیر انسانی فعل قرار دیا ہے۔

یہ تصاویر جو سنہ دو ہزار دس میں افغانستان میں اتاری گئیں تھیں امریکی اخبار لاس انجلس ٹائمز میں چند روز قبل شائع کی گئی ہیں۔

صدر حامد کرزئی نے کہا کہ افغانستان میں جاری فوجی کارروائی کو تیز رفتاری کے ساتھ نیٹو افواج سے افغان سکیورٹی فورسز کو منتقل کیا جانا چاہیے تاکہ اس قسم کے واقعات کو سدباب کیا جا سکے۔

امریکی ایوان صدر وائٹ ہاؤس نے ان تصاویر کی مذمت کی تھی اور ان قابلِ سزا قرار دیا تھا۔

افغانستان میں گزشتہ چند مہینوں میں امریکی فوجیوں کی نامناسب حرکات کے کئی ایک واقعات سامنے آئے ہیں جو افغان اور امریکی حکومتوں کے درمیان تعلقات میں کشدیگی کا باعث بنے ہیں۔

اس سے قبل بگرام کے ہوائی اڈے پر قران شریف کے نسخے جلا جانے کے واقع میں پورے افغانستان میں شدید عوامی مظاہرے ہوئے تھے اور ان مظاہروں میں درجنوں لوگ ہلاک ہو گئے تھے۔ اس کے علاوہ ایک اور واقع میں ایک امریکی فوجی نے رات کے وقت کی جانے والی ایک فوجی کارروائی کے دوران ایک گھر میں گھس کر عورتوں کو بچوں کو بلاوجہ ہلاک کر دیا تھا۔