بان کی مون کا برما کا دورہ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption برما میں تبدیلی اپنے انتہائی نازک موڑ پر پہنچ چکی ہے: بان کی مون

اقوامِ متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون برما کا تاریخی دورہ کررہے ہیں جہاں وہ حزبِ اختلاف کی رہنماء آنگ سانگ سوچی سے ملاقات کریں گے اور برما کی حکومت پر مزید جمہوری اصلاحات متعارف کرانے کے لیے دباؤ ڈالیں گے۔

بان کی مون کا کہنا ہے کہ برما میں تبدیلی اپنے انتہائی نازک موڑ پر پہنچ چکی ہے۔

ایک سال پہلے اصلاحاتی حکومت کے اقتدار میں آنے کے بعد اعلٰی شخصیات نے برما کے سفارتی دورے کیے ہیں جبکہ موجودہ حکومت کے اقتدار سنبھالنے کے بعد بان کی مون کا برما کا یہ پہلا دورہ ہوگا۔

سنیچر کو یورپی یونین کی خارجہ امور کی سربراہ کیتھرین ایشٹن نے کہا تھا کہ یورپی یونین برما میں سفارتی سطح کا دفتر قائم کرے گا۔

برما پہنچنے سے قبل نیویارک میں بان کی مون نے کہا ہے کہ برما کے دروازے دنیا کے لیے دوبارہ کھل رہے ہیں۔

تاہم انہوں نے کہا کہ دوبارہ آغاز اب بھی نازک ہے۔

اس سے قبل بان کی مون نے اُس وقت کی حکومت کی دعوت پر جولائی سنہ دو ہزار نو میں برما کا دورہ کیا تھا اور مایوس لوٹے تھے۔

انہیں اس وقت نوبل انعام یافتہ آنگ سانگ سوچی سے ملاقات نہیں کرنے دی گئی تھی جو اُس زمانے میں حراست میں تھیں۔

تاہم اس بار توقع کی جارہی ہے کہ بان کی مون اور آنگ سانگ سوچی کے درمیان منگل کو ملاقات ہو گی۔ اس کے علاوہ وہ برما کی پارلیمان سے بھی خطاب کریں گے جو کسی بیرونی اعلٰی شخصیت کا پارلیمانی اراکین سے پہلا خطاب ہوگا۔

بان کی مون برما پہنچنے کے بعد پیر کو صدر تھین سین سے ملاقات کریں گے جس کے بعد وہ شمالی ریاست شان کا بھی دورہ کریں گے۔

ریاست شان میں افیون کی کاشت دنیا میں سب سے زیادہ ہوتی ہے اور وہاں اقوامِ متحدہ کی مدد سے اس کی کاشت کے خاتمے کے لیے کام ہورہا ہے۔

اس ہفتے کے اوائل میں یورپی یونین نے تاریخی اصلاحات کا اعتراف کرتے ہوئے برما پر عائد غیر فوجی پابندیاں اٹھانے کا اعلان کیا تھا۔

برما کے دارالحکومت رنگون میں بی بی سی نامہ نگار کا کہنا ہے غیر ملکی اعلٰی شخصیات کے برما کے دوروں میں تیزی آنا ظاہر کرتا ہے کہ دنیا اس ملک میں کتنی دلچسپی لے رہی ہے۔

نامہ نگار کا کہنا ہے کہ دنیا کے ممالک کا عزم ہے کہ برما میں شروع ہونے والا اصلاحاتی عمل اس ملک کو درست سمت لے جائے تاکہ مستقبل میں وہاں سرمایہ کاری کے مواقعوں سے بھی فائدہ حاصل کیا جاسکے۔

اسی بارے میں