نیویارک: ون ٹریڈ سینٹر بلند ترین عمارت

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ون ٹریڈ سینٹر یا فریڈم ٹاور کی تعمیر اپریل سال دو ہزار چھ میں شروع ہوئی تھی

امریکہ کے شہر نیویارک میں گیارہ ستمبر سال دو ہزار گیارہ یا نائن الیون کے حملوں کی زد میں آنے والے ٹون ٹاورز کی جگہ بننے والی کثیرالمنزلہ عمارت شہر کی بلند ترین عمارت بن گئی ہے۔

ون ورلڈ ٹریڈ سینٹر نامی اس زیر تعمیر عمارت کے 100ویں منزل پر سٹیل کے ستون نصب کرنے سے اس کی اونچائی بارہ سو اکہتر فٹ سے کچھ زیادہ ہو گئی اور اس نے ایمپائر سٹیٹ بلڈنگ کو بھی نیچے چھوڑ دیا ہے۔

تعمیراتی کارکن عمارت کی منزلوں میں اضافہ کرتے جا رہے ہیں جس کی تعمیر ایک سال سے کم عرصے میں مکمل ہوتی نظر نہیں آتی۔

عمارت کی تعمیر مکمل ہونے کے بعد امکان ہے کہ اسے امریکہ کی بلند ترین عمارت قرار دیا جائے۔

اس عمارت کی تعمیر سال دو ہزار چھ میں شروع ہوئی تھی اور مکمل ہونے کی بعد کی بلندی سترہ سو چھہتر فٹ ہو گی۔

ون ٹریڈ سینٹر یا فریڈیم ٹاور ایک ایسے وقت نیویارک کی بلند ترین عمارت بن گئی ہے جب بدھ دو مئی کو اسامہ بن لادن کی ہلاکت کو ایک سال مکمل ہو گیا ہے۔

ون ٹریڈ سینٹر جسے فریڈیم ٹاور بھی کہا جاتا ہے کے 69 فلورز یا منزلیں دفاتر کے لیے مخصوص ہونگے اس کے علاوہ ریستوان اور ٹیلی ویژن کے دفاتر ہونگے اور شہر کا نظارہ کرنے کا ڈیک یا عرشہ بھی تعمیر کیا جائے۔

اسی بارے میں