سپین: عوامی تحریک کی پہلی سالگرہ پر احتجاج

تصویر کے کاپی رائٹ AP

یورپی ملک سپین میں حکومت کی معاشی حکمتِ عملی کے خلاف ملک گیر عوامی احتجاج کا ایک سال پورا ہونے کے موقعے پر دارالحکومت میڈرڈ سمیت کئی شہروں میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔

سنیچر اور اتوار کر درمیانی شب کو لوگ سڑکوں اور گلیوں میں رات بھر جمع رہے اور حکومت کی طرف سے بچت کرنے کی معاشی حکمتِ عملی کے خلاف احتجاجی تحریک کی پہلی سالگرہ منائی۔

سپین میں کئی دہائیوں کے بدترین معاشی بحران پر عوام نے احتجاجی تحریک’ مظاہرین کو مشتعل کا نام دیا گیا تھا‘ شروع کی تھی۔

پولیس کے مطابق میڈرڈ کے احتجاجی مظاہرے میں پینتالیس ہزار کے قریب افراد تھے جبکہ مظاہرے کے منتظمین نے یہ تعداد لاکھوں میں بتائی ہے۔

سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب کو دارالحکومت میڈرڈ کے مرکزی چوک پیوٹا ڈی سول میں پولیس کی جانب سے دی جانے والی مہلت ختم ہونے کے باوجود مظاہرین جمع ہیں۔

گزشتہ سال مظاہرین نے اس چوک پر خیمہ زن ہو کر کئی دنوں تک احتجاج کیا تھا تاہم اب کی بار حکومت کا کہنا ہے کہ دی گئی مہلت کے بعد احتجاج کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

مظاہرے میں شامل ایک خاتون صوفیہ ریوز نے برطانوی خبر رساں دارے رائٹرز کو بتایا کہ’ ہمارا مقصد عوام کے لیے دوبارہ موقع حاصل کرنا ہے۔‘

مظاہرے میں شامل ایک بے روز گار ڈاکٹر جوز ہلمینڈیز نے بی بی سی کو بتایا کہ’ بہت سارے لوگ روزگار کے لیے ملک چھوڑ کر جا رہے ہیں اور مایوس ہو کر اپنے شعبے سے ہٹ کر کام کرنے پر مجبور ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ایک سال پہلے حکومت کی بچت مہم کے خلاف عوامی تحریک کا آغاز ہوا تھا

انہوں نے بتایا’وہ فرانس میں رہائش پذیر تھے اور تقریباً دو سال پہلے سپین آیے لیکن یہاں آ کر صرف محدود مدت کی نوکریوں کو ہی پایا۔‘

اس وقت دو ہزار کے قریب پولیس اہلکار چوک کے اطراف میں تعینات ہیں تاہم ابھی تک انہوں نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے کارروائی شروع نہیں کی۔

دریں اثناء ماسکو، نیو یارک، ایتھنز اور فرینکفرٹ کے لوگوں نے بھی سپین کے مظاہرین کے ساتھ اظہارِ یکجتی کے لیے مظاہرے کیے اور بچت کے منصوبوں کی مذمت کی۔

لندن میں ایسے ہی ایک مظاہرے کے دوران پولیس نے دس افراد کو حراست میں لیا ہے۔

سپین میں معاشی بحران کی وجہ سے اپریل میں بے روزگاری کی شرح بلند ترین سطح پر پہنچ گئی جب کہ حکومت نے کفایت شعاری یا بچت کرنے کے حوالے سے مزید اقدامات کا اعلان کیا ہے۔

اسی بارے میں