آسٹریا: باپ نے بیٹے کو کلاس سے نکال کر گولی مار دی

آسٹریا کا سکول تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جس شخص نے اپنے بیٹے کو گولی ماری اس پر گھریلو تشدد جیسے معاملات میں ملوث ہونے کا الزام پہلے بھی ہے

آسٹریا میں ایک شخص نے اپنے بیٹے کے سکول جا کر اسکے سر میں گولی مار دی جس کی وجہ سے اس کا بیٹا شدید زخمی ہوگیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق بعد میں وہ چالیس سالہ شخص ایک شاہراہ پر مردہ پایا گیا۔

اطلاعات کے مطابق بظاہر طور پر یہ شخص ویانا کے مغربی شہر سانکت پالٹن میں واقع سکول میں اپنے بیٹے کو گولی مار کر بھاگ گیا تھا۔

آسٹریا کے سرکاری ریڈیو او آر ایف کا کہنا ہے کہ اس شخص نے اپنے بیٹے اور بیٹی کو ان کی کلاس سے باہر بلایا اور لڑکے کو گولی مار دی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس شخص کا گھریلو تشدد کے معاملات میں ملوث ہونے کا ریکارڈ ہے۔

آسٹریا کی ڈیر سٹینڈرڈ نیوز ویب سائٹ کا کہنا ہے کہ اتفاق سے جب یہ واقعہ ہوا تو سکول میں چار ڈاکٹر موجود تھے جو اس وقت بچوں کو فسٹ ایڈ سکھا رہے تھے۔

ڈاکٹروں نے فوراً زخمی لڑکے کی سرجری کی۔ یہ ڈاکٹر اس واقعہ کے ایک دو منٹ بعد ہی لڑکے کو ہسپتال لے آئے اور پانچ منٹ میں ہی ایمرجینسی ڈاکٹر پہنچ گئے۔ لڑکے کو فوراً مصنوعی طور پر سانس لینے کی سہولت فراہم کی گئی۔

ایک مقامی تعلیمی اہلکار کا کہنا ہے کہ پولیس نے اس بچے کے والد کے فون کو ٹریک کیا اور ان کا پتہ لگایا۔ یہ شخص ہائی وے پر الٹی پڑی کار کے اندر مردہ پایا گیا۔

اسی بارے میں