’سابق وزیراعظم صدارتی انتخاب لڑ سکتے ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

مصر کی سپریم کورٹ نے ملک کے سابق وزیرِ اعظم احمد شفیق کو رواں ہفتے ہونے والے صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دے دی ہے۔

اس سے پہلے عدالت نے مصر کے اس قانون پر غور کیا جس کے مطابق احمد شفیق کے انتخابات میں حصہ لینے پر اس لیے پابندی تھی کیونکہ وہ سابق صدر حسنی مبارک کی حکومت کا حصہ تھے۔

واضح رہے کہ مصر کے الیکشن کمیشن نے ایک قانون کے تحت ان تمام افراد پر انتخابات میں حصہ لینے پر پابندی عائد کر دی گئی تھی جوسابق صدر حسنی مبارک کی حکومت میں مختلف عہدوں پر فائز تھے۔

مصر کی سپریم کورٹ نے ایک دوسرے فیصلے میں گزشتہ سال ہونے والے ایک تہائی ارکانِ پارلیمان کے انتخاب کو غیر آئینی قرار دیا۔

عدالت نے اس فیصلے میں یہ واضح نہیں کہ غیر آئینی قرار دی جانے والی نشتوں پر نئے انتخابات کرائے جائیں گے یا نہیں۔

مصر کے سابق وزیر اعظم احمد شفیق، اخوان المسلمین کے امیدوار محمد مرسی کے خلاف صدارتی انتخاب میں حصہ لے رہے ہیں۔

مصر کی سپریم کورٹ کی جانب سے دیے جانے والے فیصلے کے موقع پر عدالت کے باہر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے اور مظاہرین کو عدالت کے اندر جانے سے روکنے کے لیے خار دار تاریں لگائیں گئی تھیں۔

متعدد مظاہرین نے عدالتی فیصلے کے خلاف نعرے بازی کی اور احمد شفیق کو انتخابات کے لیے نا اہل قرار دینے کا مطالبہ کیا۔

قاہرہ میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار جم لیون کا کہنا ہے کہ عدالتی فیصلے کے بعد ابھی یہ واضح نہیں کہ آئندہ کیا ہو گا؟

اسی بارے میں