غزہ پر اسرائیلی فضائی حملے، دو افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

غزہ کی پٹی پر جمعے اور سنیچر کے روز ہونے والے اسرائیلی فضائی حملوں میں دو فلسطینی ہلاک اور اکیس زخمی ہوگئے ہیں۔

چند دن قبل ہی فلسطین اور اسرائیل کے درمیان ہونی والا فائر بندی کو توڑا گیا تھا۔

اسراییل کی دفاعی فورسز کا کہنا ہے کہ اس فضائی حملے میں اُن لوگوں کو نشانہ بنایاگیا ہے جو راکٹ حملے کی تیاری کر رہے تھے۔

اسرائیل اور غزہ کی سرحد پر حالیہ دنوں میں بدترین تشدد دیکھنے میں آیا ہے۔ گذشتہ پیر سے جاری اسرائیلی فضائی حملوں میں اب تک دس فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ عسکریت پسندوں نے ایک سو تیس سے زائد راکٹ فائر کیے ہیں۔

جمعے کے روز بھی فلسطینی عسکریت پسندوں نے اسرائیلی کی حدود میں دو راکٹ فائر کیے تاہم اس سے کوئی نقصان نہیں ہوا۔

اسرائیل کی دفاعی فورسز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انہوں نے جمعے کے روز ’ایک دہشتگرد گروہ کو نشانہ بنایا ہے جو غزہ کی پٹی کے وسط سے اسرائیل کی جانب راکٹ فائر کرنے کی تیاری کر رہا تھا۔‘ اس حملے میں ایک شخص ہلاک ہوا۔

جمعے کے روز ہی دوسرے فضائی حملے میں اٹھارہ برس کا ایک نوجوان ہلاک ہوا جسے اسرائیلی فورسز نے حملہ آوروں کا ساتھی قرار دیا ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق دونوں افراد اسلامی سلفی نامی عسکریت پسند گروپ سے تعلق رکھتے تھے۔

سنیچر کے صبح ہونے والے حملوں میں غزہ شہر کے وسط میں موجود حماس انتظامیہ کے ایک سکیورٹی کمپاؤنڈ کو بھی نشانہ بنایا گیا۔ حملے میں کمپاؤنڈ کے قریب واقعے گھروں کو بھی نقصان پہنچنے کی اطلاعات ہیں۔ اسرائیل اور فلسطینی عسکریت پسندوں میں حالیہ جھڑپیں پیر کے روز شروع ہوئیں۔

اسی بارے میں