وینزویلا:صدر کے مخالف چینل کے اثاثے ضبط

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ہوگو شاویز سات اکتوبر کو ہونے والے الیکشن میں تیسری بار صدر بننے کے لیے کوشاں ہیں

وینزویلا کی سپریم کورٹ نے صدر ہوگو شاویز کے مخالف نیوز چینل کے ستاون لاکھ ڈالر مالیت کے اثاثے ضبط کرنے کا حکم دیا ہے۔

گلوبو وژن نامی اس چینل نے حکومت پر الزام عائد کیا تھا تھا کہ وہ اکتوبر میں صدارتی انتخاب کی مہم کے آغاز سے قبل اس پر دباؤ ڈالنا چاہتی ہے۔

صدر شاویز کے حریف ہنریک کیپرائلس نے سپریم کورٹ کے اس حکم کو حکومت کی آزاد میڈیا کو خاموش کرنے کی کوشش قرار دیا ہے۔

گلوبو وژن وینزویلا میں نشریات دکھانے والا وہ واحد چینل بچا ہے جو صدر شاویز کا مخالف ہے۔

عدالت نے اثاثوں کی ضبطی کا حکم اس معاملے کی سماعت کے دوران دیا جس میں گلوبو وژن نے ایل روڈیو جیل میں آتشزدگی کی کوریج کے سلسلے میں چینل پر عائد کیا جانے والا اکیس لاکھ ڈالر کا جرمانہ چیلنج کیا تھا۔

اس حادثے میں بیس افراد ہلاک ہوئے تھے اور وینزویلا میں میڈیا کے نگران ادارے کوناٹیل نے گلوبو وژن پر اس واقعے کی کوریج کو ’نفرت اور عدم برداشت کو بڑھاوا دینے والا‘ قرار دیا تھا۔

گلوبو وژن نے کہا تھا کہ وہ جرمانے کی رقم ادا کرنے کی استطاعت نہیں رکھتا۔

چینل کی نائب صدر ماریا فرنینڈا فلوریس کا کہنا ہے کہ ’عدالت کا حکم ہمارے لیے حیران کن نہیں کیونکہ انتخابی مہم کا آغاز ہونے والا ہے اور حکومت غیرجانبدار نجی میڈیا پر دباؤ ڈالنے کے لیے عدالتی اقدامات کروا رہی ہے‘۔

وینزویلا میں صدارتی انتخاب کے لیے مہم اتوار سے شروع ہو رہی ہے اور موجودہ صدر شاویز سات اکتوبر کو ہونے والے الیکشن میں تیسری بار صدر بننے کے لیے کوشاں ہیں۔

ملک میں حزبِ اختلاف اکثر شاویز حکومت پر ذرائع ابلاغ پر دھونس جمانے کے الزامات عائد کرتی ہے۔ وینزویلا میں کئی نجی ریڈیو اور ٹی وی سٹیشن اس بنیاد پر بند ہو چکے ہیں کیونکہ وہ حکومتی معلومات نشر کرنے کے قانون کی پاسداری کرنے میں ناکام رہے تھے۔

اسی بارے میں