برطانوی فوج میں کمی کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

برطانوی وزیر دفاع نے کہا ہے کہ سنہ دو ہزار بیس تک فوج کے سترہ بڑے یونٹس کو ختم کر دیا جائے گا جس کی وجہ سے بیس ہزار فوجیوں کی نوکری ختم ہو جائےگی۔

فلپ ہیمنڈ نے پارلیمان کو بتایا کہ ختم ہونے والے فوجی یونٹس میں چار انفینٹری بٹالین اور توپ خانے کے دو حصے شامل ہیں۔

وزیر دفاع کے مطابق باقاعدہ سپاہیوں کی تعداد ایک لاکھ، دو ہزار سے کم ہو کر بیاسی ہزار تک رہ جائے گی تاہم ریزو فوجیوں کی تعداد دگنی ہو کر تیس ہزار تک پہنچ جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ برطانوی فوج کی تعداد سرد جنگ کے دور سے آدھی رہ جائے گی۔

واضح رہے کہ سنہ انیس سو اٹھہتر میں برطانوی فوج کی تعد ایک لاکھ تریسٹھ ہزار سے زیادہ تھی۔

فلپ ہیمنڈ نے کہا انفینٹری میں موجودہ رجمنٹ یا کیپ بیجز کے فوجیوں کی نوکری ختم نہیں ہو گی۔

وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ گزشتہ حکومت نے جو خرچے کیے وہ موجودہ حکومت کو وراثت میں ملے جس کی وجہ سے ہمیں اپنے ویژن پر عملدرآمد کروانے کے لیے سخت فیصلے کرنے پڑے۔

انہوں نے کہا کہ دس سال کے سخت آپریشنز کے بعد ہمیں فوج کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے جس میں سے ہم ایک متوازن، قابل اور مستقبل میں خود کو نئے حالات کے مطابق ڈھال لینے والی فوج بنا سکیں۔

فلپ ہیمنڈ نے کہا کہ سنہ دو ہزار بیس کی فوج ایک لچکدار اور پھرتیلی فوج ہو گی۔

اسی بارے میں