’افغانستان امریکہ کا اہم غیر نیٹو اتحادی‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

امریکی وزیر خارجہ ہلری کلنٹن نے سنیچر کو کابل کے غیر اعلانیہ دورے پر افغانستان کو امریکہ کا اہم غیر نیٹو اتحادی قرار دیا ہے۔

اس سے قبل یہ حیثیت آسٹریلیا، مصراور اسرائیل کو حاصل تھی۔

اس حیثیت میں ان ممالک کو امریکی ہتھیاروں کی برآمد اور دفاعی تعاون حاصل ہوتا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ ہلری کلنٹن افغانستان کے صدر حامد کرزئی سے ملاقات کریں گی۔ جس کے بعد وہ جاپان جائیں گی جہاں افغانستان کے حوالے سے اتوار کو ٹوکیو میں ہونے والی بین القوامی کانفرنس میں شرکت کریں گی۔

امید کی جا رہی ہے کہ ٹوکیو کانفرنس سنہ دو ہزار چودہ کے اختتام پر افغانستان سے ایک لاکھ تیس ہزار نیٹو افواج کے ممکنہ انخلاء کے بعد کابل کے ساتھ تعاون پر غور کرے گی۔

افغانستان کے حوالے سے جاپان میں اتوار کو ہونے والی کانفرنس میں شرکاء افغانستان کے سالانہ ترقیاتی فنڈ کے لیے چار ارب ڈالر دینے کا وعدہ کریں گے۔

اس سے قبل افغانستان پہنچنے کے بعد ہلری کلنٹن نے سفارت کاروں کو بتایا کہ امریکی صدر براک اوباما نے افغانستان کو سرکاری طور پر اہم غیر نیٹو اتحادی قرار دیا۔

واضح رہے کہ امریکی شہر شکاگو میں افغانستان کے مستقبل کے بارے میں دو روزہ نیٹو اجلاس میں صدر اوباما نے اپنے خطاب میں افغانستان کو سنہ دو ہزار چودہ میں نیٹو افواج کے انخلاء کے بعد بھی امریکی تعاون جاری رکھنے کا یقین دلایا تھا۔

صدر اوباما نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ امریکہ افغانستان کو سنہ دو ہزار چودہ میں نیٹو فوج کے انخلاء کے بعد بھی تنہا نہیں چھوڑے گا۔

اسی بارے میں