سعودی عرب میں متعدد مظاہرین گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption شیعہ رہنما شیخ نمر النمر کی گرفتاری کے خلاف ہونے والا ایک مظاہرہ۔

مشرقی سعودی عرب میں سکیورٹی فورسز نے سیاسی قیدیوں کی رہائی کے لیے مظاہرہ کرنے والے متعدد مظاہرین کو گرفتار کر لیا ہے۔

سعودی وزارتِ داخلہ کے بیان کے مطابق یہ گرفتاریاں اس وقت کی گئیں جب گذشتہ رات مظاہرین القطیف نامی شہر میں ٹائر جلا کر احتجاج کر رہے تھے۔

بیان کے مطابق واقعے میں کسی کو کوئی نقصان نہیں پہنچا تاہم بعض عینی شاہدین اور مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ پولیس کی فائرنگ سے کئی لوگ زخمی ہوئے ہیں۔

سعودی وزارتِ داخلہ کے مطابق گرفتار ہونے والے افراد میں ایک مفرور شخص محمد الشکوری بھی شامل ہے۔

وہ ان تیئس افراد میں شامل ہیں جن پر جنوری میں سعودی عرب کے مشرقی صوبے میں حالات خراب کرنے کا الزام تھا۔

ان پر غیر قانونی اسلحہ رکھنے، شہریوں اور پولیس اہلکاروں پر گولیاں چلانے اور غیر ملکی ایجنڈے پر کام کرنے کا الزام ہے۔

القطیف میں ہونے والے اس مظاہرے میں لوگ سیاسی قیدیوں کی رہائی کا مطالبہ کیا جا رہا تھا۔ ان گرفتار سیاسی قیدیوں میں شیعہ رہنما شیخ نمر النمر بھی شامل ہیں۔

اس ماہ کے اوائل میں بھی ان گرفتاریوں کے خلاف ہو نے والے ایک ریلی کے دوران دو افراد ہلاک ہوئے تھے۔ عینی شاہدین کے مطابق ہلاک ہونے والے مظاہرین تھے جن پر پولیس نے گولی چلائی۔ تاہم سعودی وزرات داخلہ کسی قسم کی جھڑپوں کی تردید کرتی ہے۔

تیل کے ذحیرے سے مالا مال مشرقی صوبوں میں شیعہ اکثریت ہے۔ یہ لوگ طویل عرصے سے سنی حکمراں خاندان کی شکایت کرتے ہیں۔

مارچ دو ہزار گیارہ میں ہمسایہ ملک بحرین میں ہونے والی بغاوت کے بعد سعودی عرب کے مشرقی حصوں میں بھی مظاہرے شروع ہوئے تھے۔

اسی بارے میں