مصر: سرحدی چوکی پر حملہ، پندرہ اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مصر کے سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق اسرائیل کے ساتھ بارڈر کراسنگ پوائنٹ’رفاع‘ کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کر دیا گیا ہے

حکام کا کہنا ہے کہ اسرائیل اور مصر کی سرحد پر واقع ایک چیک پوسٹ پر نامعلوم مسلح افراد کے حملے میں کم از کم پندرہ مصری پولیس اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔

اس حملے کے نتیجے میں سات مصری پولیس اہلکار زخمی بھی ہو گئے ہیں۔

اسرائیل کا کہنا ہے کہ بڑی مقدار میں اسلحے سے لیس حملہ آور دو گاڑی میں سوار تھے اور اس کے بعد انہوں نے سرحد پار کرنے کی کوشش کی۔

اسرائیلی فوج کے مطابق دو میں سے ایک گاڑی شمالی سینائی خطے میں تباہ ہو گئی جب کہ دوسری گاڑی کو فضائیہ نے تباہ کر دیا۔

ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ اس حملے میں کون ملوث تھا تاہم مصر کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق اس واقعے میں اسلامی شدت پسند ملوث ہیں۔

بعد میں مصر کے سرکاری خبر رساں ادارے نے ایک اعلیٰ فوجی اہلکار کے حوالے سے بتایا کہ حملہ آور جہادی تھے اور غزہ کی پٹی سے داخل ہوئے تھے۔

حملہ شام کے قریب اس وقت کیا گیا جب مصری پولیس اہلکار معمول کا کام بند کر کے روزہ افطار کرنے کی تیاری کر رہے تھے۔

مصر کے صدر محمد مرسی نے ایک ٹی وی خطاب میں حملے کی مزحمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک بزدلانہ عمل تھا اور مصر سینائی خطے کا مکمل کنٹرول واپس لے گا۔

اسرائیل کے وزیر دفاع ایہود براک نے ایک بیان میں کہا ہے کہ’شدت پسندوں کے حملوں کے طریقۂ کار کے بعد مصر کو اس بات کی ضرورت ہے کہ وہ سینائی خطے میں دہشت گردوں کو روکنے کے لیے کارروائی کرے اور وہاں امن و امان بحال کرے۔‘

ابھی تک یہ واضح نہیں ہو سکا ہے کہ حملہ آوروں کی تعداد کتنی تھی اور ہلاک ہونے والوں کی تعداد کیا ہے۔

اسرائیل اور مصری سکیورٹی فورسز کا کہنا ہے کہ علاقے میں تلاشی کا عمل شروع کر دیا گیا ہے تاکہ ممکنہ طور پر فرار ہونے والے حملہ آوروں کو تلاش کیا جا سکے اور کے ساتھ علاقے میں اسرائیلی شہریوں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے گھروں سے باہر نہ نکلیں۔

مصر کے سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق اسرائیل کے ساتھ بارڈر کراسنگ پوائنٹ’رفاع‘ کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ مصر کے صدر محمد مرسی نے فوجی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا ہے۔

قاہرہ میں بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ اس حملے سے ان خدشات میں اضافہ ہوا ہے کہ شدت پسند شمالی سینائی خطے میں مضبوط ہو رہے ہیں۔

اس علاقے سے اسرائیل پر متعدد بار راکٹ حملے اور سرحد پار حملوں میں نو اسرائیلی شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

اس کے علاوہ اس علاقے سے مصر کی اسرائیل اور اردن کے لیے گیس سپلائی کی پائپ لائنوں کو دھماکے سے تباہ کرنے کے واقعات پیش آ چکے ہیں۔

اسی بارے میں