یمن: ابیان میں خودکش حملہ، پینتیس افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جس شخص کی نماز جنازہ ادا کی جا رہی تھی ان کا القاعدہ کے خلاف لڑائی میں فوج کی مدد کرنے والے مسلح گروہ سے تعلق تھا

سنیچر کو یمن کے جنوبی صوبے ابیان کے ایک گاوں میں مبینہ خودکش حملے میں پینتیس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

حکام کے مطابق یہ حملہ جار نامی گاؤں میں ایک نمازِ جنازہ کے دوران ہوا۔

فوجی حکام نے امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کو بتایا کہ جس شخص کی نماز جنازہ ادا کی جا رہی تھی ان کا القاعدہ کے خلاف لڑائی میں فوج کی مدد کرنے والے مسلح گروہ سے تعلق تھا۔

فوجی حکام کے مطابق سنیچر کو ہی ایک ڈرون حملے میں القاعدہ کے پانچ مبینہ شدت پسند ہلاک ہو گئے تھے۔ یہ ڈرون حملہ ہدرامعوت صوبے میں ایک گاڑی پر کیا گیا تھا۔

مقامی گورنر جمال العقال نے اس واقعے کو مجرمانہ اور بزدال قرار دیتے ہوئے کہا کہ واقعے کی تحقیقات شروع کر دیں گئی ہیں۔

اس سال کے آغاز میں یمنی فوج نے مذہبی شدت پسندوں کے خلاف ابیان میں شدید کارروائی کی تھی جس کے بعد جون میں فوج نے علاقے پر قابو پا لیا تھا۔ اس کارروائی میں مقامی مسلح قبائلی اشخاص نے فوج کی مدد کی تھی۔

ملک کے جنوب میں کئی سالوں سے علیحدگی پسند اور القاعدہ سے منسلک گروہ، جیسے کہ انصار الشریہ، سرگرم ہیں۔

اسی بارے میں