مائیک ٹائی سن کو دھمکی، ٹوئٹر کو سمن

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption مائیک ٹائی سن کا شو ’ان ڈیسپیوٹڈ ٹرتھ‘ یعنی ’غیر متنازع سچ‘ جمعرات کو شروع ہوا ہے۔

امریکہ کہ شہر نیویارک میں پولیس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر کو سمن جاری کیا ہے تاکہ اس شخص کی شناخت معلوم کی جا سکے جس نے سابق باکسر مائیک ٹائی سن کو ان کے شو کے دوران گولی مارنے کی دھمکی دی تھی۔

کمپنی نے پولیس کی جانب سے ٹویٹ کرنے والے شخص کی شناخت ظاہر کرنے سے متعلق ابتدائی درخواست مسترد کر دی تھی۔ پولیس نے یہ درخواست اس لیے کی کہ ٹوئٹر کے ایک صارف نے ہجوم پر ہونے والے فائرنگ کے حالیہ واقعات کے بارے میں پہلے ہی ٹویٹ میں خبردار کیا تھا۔

مائیک ٹائی سن کا شو ’ان ڈیسپیوٹڈ ٹرتھ‘ یعنی ’غیر متنازع سچ‘ جمعرات کو شروع ہوا ہے۔

دھمکیاں ملنے کے بعد پولیس نے اس شو کی سیکیورٹی میں اضافہ کر دیا ہے۔

خبر رساں ادارے ای بی سی کے مطابق اس شخص نے کئی دوسری اہم شخصیات کو بھی دھمکیاں دیں ہیں۔

منگل کی شام نیویارک پولیس نے بتایا کے ٹویٹر کو سمن جاری کر دیے گئے ہیں۔

جولائی اور اگست کے اوائل میں ایک نامعلوم شخص نے تھیٹر پر مرحلہ وار حملوں سے متعلق کئی ٹویٹس کیے۔

ایک ٹویٹ میں لکھا تھا ’میں سنجیدہ ہوں آرورا (امریکی شہر) میں لوگ مرنے والے ہیں۔‘

بیس جولائی کو امریکی شہر آرورا کے ایک تھیٹر میں بیٹ مین کی نئی فلم کے دوران سینما میں فائرنگ سے بارہ افراد ہلاک اور اٹھاون زخمی ہو گئے تھے۔

اس کے بعد کی گئی ایک ٹویٹ میں ایک شخص کے سوال کا جواب دیتے ہوئے اس نے کہا کہ’ اس وقت میں فلوریڈا میں ہوں لیکن میں وعدہ کرتا ہوں کہ ایسا ہوگا۔ میں اپنی ہٹلسٹ مکمل کر رہا ہوں۔‘

اسی بارے میں