سینائی میں فوجی کارروائی، بیس ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مسلح افراد نے العریش میں قائم سکیورٹی چیک پوسٹ پر حملہ کیا تھا

مصر کے سکیورٹی حکام کا کہنا ہے کہ فوجی ہیلی کاپٹروں نے سینائی کے علاقے میں مبینہ اسلامی شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر میزائل داغے ہیں۔

حکام کے مطابق یہ میزائل سینائی کے علاقے العریش کے علاقے میں داغے گئے۔ اطلاعات کے مطابق اس حملے میں بیس افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

سکیورٹی فورسز نے یہ حملہ اس حملے کے بعد کیا جس میں مسلح افراد نے العریش میں قائم سکیورٹی چیک پوسٹ پر حملہ کیا تھا۔ اس حملے میں کئی افراد زخمی ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ اتوار کے روز العریش ہی میں سولہ سرحدی گارڈز ہلاک کردیے گئے تھے۔ اس حملے کے بعد اسرائیل نے کہا تھ کہ اس نے سات افراد کو ہلاک کیا جو اسرائیل میں داخل ہونے کی کوشش کر رہے تھے۔

اس حملے کے بعد سے شمالی سینائی میں گشت بند کردیے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ مصر کی غزہ کے ساتھ سرحد کراسنگ کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کردیا گیا ہے۔

سکیورٹی حکام نے امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کو بتایا کہ 1973 کی اسرائیل کے ساتھ جنگ کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ مصری فوج نے سینائی کے علاقے میں میزائل داغے ہیں۔

سینائی میں فوجی کمانڈر نے برطانوی خبر رساں ایجنسی رائٹرز کو بتایا کہ اطلاع ملی تھی کہ سینائی میں الطوما گاؤں میں شدت پسند ہیں۔ ’ہم الطوما گاؤں میں داخل ہونے میں کامیاب ہو گئےآ اس آپریشن میں بیس شدت پسند ہلاک جبکہ شدت پسندوں کی تین بکتر بند گاڑیاں بھی تباہ ہوئیں۔ آپریشن ابھی جاری ہے۔‘

اسی بارے میں