مصری صدر نے صحافی اسلام افیفی کو رہا کر دیا

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 24 اگست 2012 ,‭ 02:04 GMT 07:04 PST

اسلام افیفی ’الدستور‘ نامی اخبار کے ایڈیٹر ہیں

مصر میں ایک صدارتی حکم نامے کے بعد گرفتار صحافی اسلام افیفی کو رہا کر دیا جا رہا ہے۔ ان پر غیر مصدقی اطلاعات پھیلانے کا الزام تھا۔

اس حکم نامے میں ذرائع ابلاغ کے حوالے سے جرائم ہونے سے پہلے ہی گرفتاریوں کے اختیارات کو منسوخ کر دیا گیا ہے۔

اسلام افیفی ’الدستور‘ نامی اخبار کے ایڈیٹر ہیں۔

ریاستی خبر رساں ایجنسی مینا کے مطابق صدارتی ترجمان یاسر علی نے بتایا کہ یہ پہلی بار ہے کہ صدر مرسی نے قانونی طاقت استعمال کرتے ہوئے حکم نامہ جاری کیا ہے۔

صدر محمد مرسی نے تیس جون کو اقتدار سنبھالا تھا اور انہوں نے مصری فوج سے بہت سے اختیارات واپس لے لیے تھے۔

پراسیکیوٹر جنرل یعنی حکومتی استغاثہ نے اس بات کی تصدیق کی کہ صدارتی حکم نامے کے مطابق اسلام افیفی کو رہا کر دیا جائے گا تاہم انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ رہائی کب عمل میں آئے گی۔

اس سے پہلے جمعرات کو قاہرہ میں ایک عدالت نے اسلام افیفی کی حراست برقرار رکھتے ہوئے ان کی اگلی پیشی کی تاریخ سولہ ستمبر رکھی تھی جس کا مقصد اس الزام کی تفتیش کرنا تھا کہ کیا انہوں نے صدر مرسی کی بے عزتی کی ہے کہ نہیں۔

اسلام افیفی صدر حسنی مبارک کی گزشتہ سال حکومت گرنے کے بعد پہلے صحافی ہیں جن پر مقدمہ چلایا گیا ہے۔

اس سے پہلے گرفتاری کے وقت انہوں نے اے ایف پی کو بتایا تھا کہ یہ مقدمہ سیاسی ہے اور ان پر لگائے گئے الزامات کے پیچھے سیاسی مقاصد ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ مقدمہ مصری تحریک کی کامیابی کا اصل امتحان ہوگا کیونکہ تحریک کا حقیقی مطالبہ اظہارِ رائے کی آزادی تھا۔

مصری پریس سینڈیکیٹ، انسانی حقوق کی مصری تنظیم اور صحافیوں کی عالمی تنظیم رپورٹرز ودائوٹ بارڈرز افیفی کو حراسی میں رکھنے کے عدالتی فیصلے کی تنقید کی تھی۔

اسلام افیفی اور ٹی وی کی شخصیت توفیق اوکاشا، جن پر صدر مرسی کے قتل کے لیے استعال پھیلانے کا الزام تھا، دونوں مقدموں کے بعد امریکہ میں مصر کی آزادیِ صحافت کے بارے میں تشویش بڑھنے لگی ہے۔

امریکی وزارتِ خارجہ کی ترجمان وکٹوریا نولینڈ کا کہنا تھا کہ یہ دونوں مقدمے گزشتہ سال کی تحریک کی روح کے منافی ہیں۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔