’سیف الاسلام قذافی کا مقدمہ ستمبر میں ہوگا‘

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 24 اگست 2012 ,‭ 22:52 GMT 03:52 PST

’مجھے موت سے ڈر نہیں لگتا مگر اگر آپ نے اس طرح کے مقدمے کے بعد مجھے مارنا ہے تو اسے قتل کا نام دیں۔‘ سیف الاسلام قذافی

لیبیا میں پراسیکیوٹر جنرل یعنی حکومتی استغاثہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ سابق حکمران کرنل معمار قذافی کے صاحبزادے سیف السلام قذافی کے خلاف مقدمہ ستمبر کے مہینے میں چلایا جائے گا۔

یہ مقدمہ زنتان نامی شہر میں ہوگا جہاں انہیں گزشتہ سال سے زیرِ حراست رکھا گیا ہے۔

انٹرنیشنل کریمینل کورٹ یعنی جرائم کی عالمی عدالت نے ان کے خلاف وارنٹ جاری کر رکھے ہیں تاہم عدالت کا کہنا ہے کہ وہ اس پیش رفت سے آگاہ ہیں مگر لیبیائی حکام نے ان سے رابطہ نہیں کیا ہے۔

سیف الاسلام واضح کر چکے ہیں کہ وہ چاہتے ہیں کہ ان کا مقدمہ عالمی عدالت میں سنا جائے۔

کچھ لوگوں نے خدشات ظاہر کیے ہیں کہ اگر یہ مقدمہ لیبیا میں ہوا تو سیف الاسلام کو سزائے موت دی جا سکتی ہے۔

گزشتہ سال لیبیا میں احتجاجی تحریک اور قذافی حکومت گرنے سے پہلے سیف الاسلام کو اپنے والد کا ولی عہد مانا جاتا تھا۔

بیالیس سال تک آمرانہ حکومت کرنے والے کرنل قذافی کو گزشتہ سال باغیوں نے ہلاک کر دیا تھا۔

حکومتی استغاثہ کےترجمان طاحہ ناصر براہ کا کہنا تھا کہ ’حکومتی استغاثہ کے دفتر کی ایک کمیٹی نے فروری دو ہزار گیارہ (تحریک کے آغاز) سے اب تک سیف الاسلام کے جرائم کی تفتیش مکمل کر لی ہے اور فرئدِ جرم کی ایک فہرست تیار کر لی ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ اس فردِ جرم کی حکومتی استغاثہ آئندہ چند روز میں منظوری دیں گے اور مقدمے کے آغاز کے لیے تاریخ کا اعلان بھی کریں گے۔

سیف الاسلام کو گزشتہ نومبر میں زنتان نامی شہر میں باغیوں نے حراست میں لے لیا تھا اور ان کا مطالبہ ہے کہ مقدمہ اسی شہر میں ہو۔ زنتان دارالحکومت طرابلس سے ایک سو ستر کلومیٹر جنوب مغرب میں واقع ہے۔

طاحہ ناصر براہ کا کہنا تھا کہ جرائم کی عالمی عدالت کی تفتیش میں کوئی مداخلت نہیں تھی اور لیبیائی حکام کے پاس سیف الاسلام کا مقدمہ چلانے کے لیے شواہد موجود ہیں۔

سیف الاسلام کے وکیل نے اپنے مؤکل کے حوالے سے بتایا کہ ان کا کہنا ہے کہ ’مجھے موت سے ڈر نہیں لگتا مگر اگر آپ نے اس طرح کے مقدمے کے بعد مجھے مارنا ہے تو اسے قتل کا نام دیں۔‘

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔