’نیل آرم سٹرونگ انسانیت کے ہیرو تھے‘

آخری وقت اشاعت:  اتوار 26 اگست 2012 ,‭ 14:27 GMT 19:27 PST

نیل آرم سٹرونگ سنیچر کو بیاسی سال کی عمر میں انتقال کر گئے تھے

امریکی صدر براک اوباما نے آنجہانی خلاباز نیل آرم سٹرونگ کو خراج تحسین پیش کرنے میں پہل کرتے ہوئے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا ہے کہ نیل آرم سٹرونگ نہ صرف اپنے دور بلکہ پورے زمانے کے ہیرو تھے۔

براک اوباما نے نیل آرم سٹرونگ کا شکریہ ادا کیا کہ جنھوں نے دنیا کو ایک قدم کی طاقت سے روشناس کرایا۔

نیل آرم سٹرونگ وہ پہلے انسان تھے جو چاند پر اترے اور وہ سنیچر کو بیاسی سال کی عمر میں انتقال کر گئے تھے۔

پانچ سو ملین سے زیادہ لوگوں نے انھیں بیس جولائی انیس سو انہتر کو چاند پر اترتے دیکھا اور چاند پر اترتے ہی نیل آرم سٹرونگ نے یہ الفاظ کہے ’یہ ایک شخص کے لیے ایک چھوٹا سا قدم ہے لیکن پوری انسانیت کے لیے ایک بڑی جست ہے‘۔

بعد ازاں یہ فقرہ دنیا کے مقبول ترین فقروں میں سے ایک بنا۔

نیل آرم سٹرونگ کے خاندان نے سنیچر کو ایک بیان میں ان کے موت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ دل کے آپریشن کے بعد صحت یاب نہ ہو سکے اور وفات پا گئے۔ خاندان کی طرف سے بیان میں ان کی تعریف کی گئی کہ وہ ایک عاجز امریکی ہیرو تھے۔

نیل آرم سٹرونگ کے خاندان نے ان کے مداحوں پر زور دیا کہ وہ ان کی کامیابیوں اور خدمات کو خراج تحسین پیش کریں،’جب آپ رات کو باہر نکلے اور صاف مطلع میں چاند کو مسکراتا دیکھیں تو نیل کے بارے میں سوچیں‘۔

پچھلے سال نومبر میں نیل آرم سٹرونگ کو امریکہ کے سب سے ْبڑے سول اعزاز کانگریشنل گولڈ میڈل سے نوازا گیا۔

ان کے بہت سے قریبی ساتھیوں اور دوستوں نے انھیں خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایک باعظمت، خلوت پسند اور شہرت نہ چاہنے والے شخص تھے۔

"چاند پر اترتے ہی نیل آرم سٹرونگ نے کہا کہ یہ ایک شخص کے لیے ایک چھوٹا سا قدم ہے لیکن پوری انسانیت کے لیے ایک بڑی جست ہے۔ بعد ازاں یہ فقرہ دنیا کے مقبول ترین فقروں میں سے ایک بنا۔"

مائیکل کولنز نے جو اپالو11 مشن میں نیل کے ساتھی پائلٹ تھے کہا کہ ’وہ بہترین تھا اور مجھے ان کی بہت یاد آئے گی‘۔ نیل کے دوسرے ساتھی آلڈرین نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ ایک بہت قابل اور دنیا کی بڑی کامیابی حاصل کرنے والے کمانڈر تھے اور ’ہم نے خلائی پروگرام کے ایک بڑے رہنما اور ترجمان کو کھویا ہے‘۔

ناسا کے سربراہ چارلس بولڈن نے انھیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ’وہ امریکہ کے عظیم محققین میں سے تھے‘۔ انھوں نے مزید کہا کہ جب تک تاریخ کی کتابیں ہوں گی نیل آرم سٹرونگ کا نام ان میں لکھا گیا جائے گا اور انھیں اس شخص کے طور پر یاد کیا جائے گا جنھوں نے دنیا سے دور جگہ پر پہلا انسانی قدم رکھا۔

نیل آرم سٹرونگ اکثر عوامی اجتماعات میں جانے اور میڈیا کو انٹرویو دینے سے کتراتے تھے۔ ایک تقریب میں انھوں نے کہا کہ وہ ایک غیر دلچسپ انجینئر ہیں اور ایسا ہی رہیں گے۔

آسٹریلوی ٹی وی کو دیے گئے ایک نادر انٹرویو میں انھوں نے چاند پر گزارے تین گھنٹوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ جب وہ ان امریکی اور روسی خلابازوں کو خراج تحسین دینے کے لیے رکے جو خلائی سفر کے دوران ہلاک ہوئے تھے تو یہ خصوصی یادگار چند لمحوں کی تھی کیوں کہ آگے کام کرنا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔