’مطالبات کی منظوری تک کام نہ کریں‘

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 6 ستمبر 2012 ,‭ 02:46 GMT 07:46 PST

ملےما جمعرات کو ماریکانہ پلاٹینیم کان کا دورہ کریں گے

جنوبی افریقہ کی حکمران جماعت کے سابق رہنما جولیئس ملےما نے ہڑتال کرنے والے کان کنوں سے کہا ہے کہ انہیں اس وقت تک کام بند رکھنا چاہیے جب تک ان کی تنخواہوں کے مطالبات مان نہیں لیے جاتے۔

انہوں نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ تشدد کی حمایت نہیں کرتے تاہم کان کنوں کو چاہیے کہ وہ انتظامیہ کے لیے ملکی کانوں کو چلانا ناممکن بنا دیں۔

ملےما جمعرات کو ماریکانہ پلاٹینیم کان کا دورہ کریں گے۔

ملےما نے بی بی نیوز ڈے کو بتایا کہ غیر ملکی سرمایہ کاروں نے اس ملک سے سب کچھ چرا لیا ہے اور ہم اسے واپس لینے کے لیے کچھ بھی کرنے کو تیار ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس صورتِ حال کا صرف ایک ہی حل ہے کہ جنوبی افریقہ کی کان کنوں کو نجی ملکیت سے نکال کر سرکاری تحویل میں لے لیا جائے۔

انہوں نے مزید کہا ’ہمیں ملک کے وسائل کو اپنے بچوں کے لیے سکول بنانے پر استعمال کرنے چاہیے۔‘

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ بہتر تنخواہوں کے لیے احتجاج کرنے والے کان کنوں پر پولیس کی فائرنگ سے چونتیس کان کن ہلاک ہوگئے تھے۔

اس سے پہلے جنوبی افریقہ کی حکومت نے کہا تھا کہ ملک میں تشدد کو ترغیب دینے کی کسی بھی کوشش کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔

دوسری جانب ماریکانہ کان میں کام کرنے والے مزید کان کنوں کو استغاثہ کی جانب سے قتل کے الزامات واپس لینے کے بعد جمعرات کو رہا کیا جائے گا۔

ان کان کنوں کے خلاف انہی کے چونتیس ساتھیوں کے قتل کا مقدمہ درج کیا گیا تھا جو دراصل پولیس کی فائرنگ سے ہلاک ہوئے تھے۔

ان کان کنوں کے خلاف مقامی انتظامیہ نے یہ مقدمات نسلی تفریق کے دور کے ایک پرانے قانون ’کامن پرپز‘ یا عمومی مقاصد کے تحت درج کیے تھے جن میں ان پر پولیس کو فائرنگ کرنے پر اکسانے کا الزام لگایا گیا تھا۔

کان کنوں پر فائرنگ کا یہ واقعہ پچھلے ماہ اگست میں پیش آیا تھا جب یہ کان کن تنخواہوں میں اضافے اور اپنی نئی یونین کو تسلیم کرنے کے مطالبات کے حق میں احتجاج کررہے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔