سکھ سلطنت کے وارث کی قبر کی بحالی

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 6 ستمبر 2012 ,‭ 14:01 GMT 19:01 PST
پیرش چرچ

مہاراجا دلیپ سنگھ نے اپنے نومولود بیٹے کو اس چرچ میں دفن کیا تھا

سکاٹ لینڈ کے ایک دیہاتی علاقے پرتھ شائر کے چرچ میں ایک تقریب منعقد کی جا رہی ہے، جس کا مقصد ایک ایسے بچے کی قبر کی بحالی ہے جو سکھ سلطنت کا ممکنہ وارث تھا۔

سنہ اٹھارہ سو پینسٹھ میں مہاراجا دلیپ سنگھ نے اپنے بیٹے کو کین مور پیرش چرچ میں سپردِ خاک کیا تھا۔ مہاراجا سکھ سلطنت کے آخری تاج دار تھے۔ جب ایسٹ انڈیا کمپنی نے اٹھارہ سو انچاس میں ان کی سلطنت پر قبضہ جما لیا تو مہاراجا کو جلاوطن کر کے برطانیہ بھیج دیا گیا تھا۔

اس تقریب کا اہتمام اینگلو سکھ ہیریٹج ٹریل (اے ایس ایچ ٹی) نامی تنظیم نے کیا تھا۔

اپنے عروج کے دور میں پنجاب اور اس کے ملحقہ علاقوں پر مشتمل سکھ سلطنت برطانیہ سے دوگنا بڑی تھی۔

ایسٹ انڈیا کمپنی نے ایک خوں ریز جنگ کے بعد سلطنت کو ضم کر کے مہاراجا دلیپ سنگھ کو جلاوطن کر دیا۔ اس وقت ان کی عمر دس برس تھی۔

تاہم ان کی ملکہ وکٹوریہ کے ساتھ دوستی ہو گئی جس کے بعد انہیں سر جان لوگن کی سرپرستی میں سکاٹ لینڈ بھیج دیا گیا۔ سکاٹ لینڈ میں انہوں نے عیسائی مذہب اختیار کر لیا۔

"اس کے دادا رنجیت سنگھ اور باپ دلیپ سنگھ نہ صرف ہمارے ورثے کی طاقتورعلامتیں ہیں بلکہ تاریخ کے اس فیصلہ کن دور کی بھی جس نے سکھوں اور برطانیہ کے درمیان حالیہ روابط وضع کرنے میں کردار ادا کیا ہے۔"

کین مور چرچ میں جمعرات کی سہ پہر کو ہونے والی تقریب میں دلیپ سنگھ کے نومولود صاحب زادے کی قبر کی بحالی کا کام اپنے اختتام کو پہنچا۔ وہ اگست سنہ اٹھارہ سو پینسٹھ میں اس وقت فوت ہو گئے تھے جب ان کی عمر صرف ایک دن تھی۔

بحالی کا کام کین مور پیرش چرچ کی نگرانی میں ہوا، اور اس کے اخراجات میں سکھ تنظیم نے ہاتھ بٹایا۔

اے ایس ایچ ٹی کے ڈائریکٹر ہربندر سنگھ نے کہا ’اس ننھے بچے کی المناک گمنامی اور اس کی قبر کی دورافتادگی کے باوجود حقیقت یہ ہے کہ وہ سکھ سلطنت کا وارث تھا۔‘

’اس کے دادا رنجیت سنگھ اور باپ دلیپ سنگھ نہ صرف ہمارے ورثے کی طاقتورعلامتیں ہیں بلکہ تاریخ کے اس فیصلہ کن دور کی بھی جس نے سکھوں اور برطانیہ کے درمیان حالیہ روابط وضع کرنے میں کردار ادا کیا ہے۔‘

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔