ترکی: دھماکے میں پچیس فوجی ہلاک

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 6 ستمبر 2012 ,‭ 08:13 GMT 13:13 PST
باروخانے میں دھماکے کی فوٹو

ترکی میں حکومت کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ ایک حادثہ ہے

ترکی میں فوج کا کہنا ہے کہ افیون صوبے میں فوجی اڈے پر قائم سٹور میں ایک دھماکے کے نتیجے میں پچیس فوجی ہلاک اور چار زخمی ہوگئے ہیں۔

یہ دھماکہ بدھ کی رات فوج کے بارود خانے میں ہوا جہاں دستی بم رکھے ہوئے تھے۔

ترکی میں ماحولیات کے وزیر کا کہنا ہے یہ دھماکہ ایک حادثےکا نتیجہ ہے نہ کہ شدت پسندی کی کارروائی ہے۔

اطلاعات کے مطابق دھماکے کے بعد آگ لگنے کی وجہ سے بہت سے فوجی عمارت کے اندر پھنس گئے تھے۔

اطلاعات کے مطابق دستی بم جائے وقوع پر پھیلے ہوئے تھے جس کی وجہ سے امدادادی کارکنوں کے لیے اندر پھنسے ہوئے فوجیوں کو بچانا مشکل ہوگیا تھا۔

ترکی کے حریت نامی اخبار کا کہنا ہے کہ دھماکہ اتنا زور دار تھا کہ ہلاک ہونے والے فوجیوں کی شناخت ناممکن ہے۔

واقعہ کے عینی شاید کے مطابق دھماکے کے بعد شہری خوفزدہ ہو کر اپنے گھروں سے باہر آ گئے۔ شہریوں کا خیال تھا کہ صوبائی دارالحکومت میں زلزلہ آیا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔