ہانگ کانگ: چینی حب الوطنی کی کلاسوں کا اجرا ملتوی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 9 ستمبر 2012 ,‭ 23:14 GMT 04:14 PST

ہانگ گانگ میں حکومت نے سکولوں میں چین سے وفاداری سے متعلق کلاسوں کے منصوبے کو وقتی طور پر روک دیا ہے۔

ہانگ کانگ میں چین سے وفاداری سے متعلق کلاسوں کے اجرا پر سخت احتجاج ہوا ہے ۔

شہر کے رہنما لیونگ چن ینگ نے کہا ہے کہ چینی حب الوطنی سے متعلق کلاسوں کے اجرا لازمی نہیں ہے بلکہ اختیاری ہے اور اب یہ سکولوں کی صوابدید پر چھوڑ دیا گیا ہے کہ وہ ان کلاسوں کا اجرا چاہتے ہیں یا نہیں۔

منصوبے کےمطابق چینی حب الوطنی سے متعلق کلاسوں کا اجرا ستمبر 2013 سے ہونا تھا۔

اس منصوبے کے ناقدین کا کہنا ہے کہ چینی حکام ہانگ گانگ کے بچوں کے ذہنوں کو برین واش کرنا چاہتے ہیں۔

حکومت کا موقف ہے کہ قومی شناخت کو پروان چڑھانے کے لیے ان کلاسوں کا اجرا ضروری ہے۔

چینی حب الوطنی کی کلاسوں کے اجرا کو روکنے کا فیصلہ قانون ساز اسمبلی کے انتخاب سے ایک روز پہلے آیا ہے۔

اتوار کے روز ستر لاکھ آبادی کے شہر ہانگ گانگ میں ستر ممبران کی قانون ساز اسمبلی کی آدھی نشتوں پر انتخاب ہو گا۔

ہانگ کانگ میں بی بی سی کی نامہ نگار جولیانا لو کے مطابق حب الوطنی سے متعلق کلاسوں کے خلاف احتجاج سے ہانگ کانگ کے جمہوریت پسند رہنماؤں کو انتخابات میں مدد ملے گی۔ امید کی جا رہی ہے کہ ہانگ کانگ کے جمہوریت پسند رہنما قانون ساز اسمبلی کے انتخابات میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔