الجزیرہ ٹی وی پر شامی ہیکرز کا چوتھا حملہ

آخری وقت اشاعت:  پير 10 ستمبر 2012 ,‭ 15:06 GMT 20:06 PST

شامی حکومت کے حامیوں نے گزشتہ کچھ عرصے میں چار بار قطر میں قائم الجزیرہ ٹی وی کی مختف سروسز کی ہیکنگ کی ہے۔

قطر میں قائم الجزیرہ ٹی وی کی موبائل سروس کو شام کی حکومت کے حامی ہیکرز نے ہیک کر لیا ہے۔

یہ الجزیرہ کی مختلف ویب سروسز پر ہیکرز کی جانب سے اس نوعیت کا چوتھا حملہ ہے۔

الجزیرہ کی عربی زبان کی ویب سائٹ پر ایک کلِک تازہ ترین خبر میں بتایا گیا کہ ’الجزیرہ موبائل کی جانب سے بھجوائے گئے ایس ایم ایس غلط ہیں کیونکہ الجزیرہ موبائل کو ہیک کر لیا گیا ہے‘۔

اس ایس ایم ایس میں پیغام دیا گیا ہے کہ قطر کے وزیر اعظم ایک قاتلانہ حملے کا نشانہ تھے۔

شامی حکومت کے حامی ایک گروپ جو اپنے آپ کو شامی الیکٹرونک آرمی کہتا ہے نے کلِک اس حملے کی ذمے داری قبول کی ہے۔

الجزیرہ ٹی وی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کلِک ایک ٹویٹ میں کہا کہ ’ہم اپنے سبسکرائبرز کو مطلع کرنا چاہتے ہیں کہ الجزیرہ موبائل سروس پر ہیکرز نے حملہ کر کے اس کا اختیار حاصل کرنے کی کوشش کی ہے اور غلط خبریں بھی بھجوائیں ہیں۔‘

ایک اور جعلی ایس ایم ایس میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ قطر کے امیر کی اہلیہ شیخہ موضع بنت ناصر المسند زخمی ہوئی ہیں۔

شام میں بغاوت کے بعد یہ چوتھا موقع ہے جب الجزیرہ کی ویب سائٹ پر حملہ کیا گیا ہے۔ پچھلے ہفتے الجزیرہ کے عربی اور انگریزی کی ویب سائٹ کو بھی حملہ کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

اس حملے کے نتیجے میں الراشدون نامی ایک گروہ نے ویب سائٹ کے پہلے صفحے پر اپنا پیغام اور شام کا جھنڈا شائع کیا تھا۔

فروری کے مہینے میں بھی ایس ای اے نامی اس گروہ نے الجزیرہ انگریزی کی ویب سائٹ پر حملہ کیا تھا۔

"الجزیرہ موبائل کی جانب سے بھجوائے گئے ایس ایم ایس غلط ہیں کیونکہ الجزیرہ موبائل کو ہیک کر لیا گیا ہے۔"

الجزیرہ عربی پر خاص خبر

جولائی میں اسی گروہ نے الجزیرہ انگریزی کے ٹوئٹر اکاؤنٹ تک رسائی حاصل کر کے شامی باغیوں کی مذمت پر مشتمل ٹوئٹس بھیجنا شروع کر دیں تھیں۔

قطر کی حکومت شامی صدر بشار الاسد کی حکومت کے خلاف باغیوں کی حمایت کرتی رہی ہے۔ اسی طرح الجزیرہ نے بھی اس بغاوت کے آغاز سے اس سارے بحران کو بہت تفصیل سے کوریج دی تھی۔

ہیکرز کے اسی گروہ نے سعودی عرب کے ملکیتی العریبیہ ٹی وی اور امریکہ کی ہارورڈ یونیورسٹی کی ویب سائٹ پر بھی حملہ کیا تھا۔

اگست کے مہینے میں خبر رساں ایجنسی رائٹر کی ویب سائٹ پر بھی شامی حکومت کے حامی ہیکرز نے حملہ کیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔