یونان: ’محل اور سفارتی جائیداد بیچنے کا فیصلہ‘

آخری وقت اشاعت:  اتوار 23 ستمبر 2012 ,‭ 17:22 GMT 22:22 PST

یونان کی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ مالیاتی بحران کو نجکاری کے ذریعے حل کرنے کے لیے شاہی محل اور سفارتی جائیداد کو بیچ دیا جائے گا۔

یونان کے دارالحکومت ایتھنز میں بی بی سی کے نامہ نگار نے بتایا کہ مالی بحران کو حل کرنے کے لیے حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ایتھنز کے مضافات میں شاہی محل کو بیچ دیا جائے گا۔

اس کے علاوہ یہ بھی فیصلہ کیا گیا ہے کہ یونان کی سفارتی جائیداد کو بیچ دیا جائے گا۔ اس سفارتی جائیداد میں لندن، برسلز اور بلغراد شامل ہیں۔

ان دنوں یونان عالمی قرضے کی اگلی قسط کے لیے مذاکرات کر رہا ہے۔ اس قسط کے لیے ایک شرط یہ ہے کہ یونان دیگر ممالک میں اپنی جائیدادیں بیچے۔

یونان کی حکومت نے جن جائیدادوں کو بیچنے کا فیصلہ کیا ہے ان میں ایتھنز کے مضافات میں ٹٹوئی شاہی محل بھی ہے۔

یونان کی حکومت نے جن سفارتی جائیدادوں کو بیچنے کا فیصلہ کیا ہے اس میں لندن کے مہنگے علاقے ہالینڈ پارک میں یونانی سفیر کی رہائش گاہ ہے۔ یہ رہائش گاہ تقیباً ایک ہزار مربع میٹر پر بنی ہوئی ہے۔

اس کے علاوہ برسلز، بلغراد اور سلووینیا میں سفارتی جائیداد بھی بیچی جائیں گی۔

یونان پر دباؤ ہے کہ سنہ دو ہزار بیس تک اس کو پچاس بلین یورو اکٹھے کرنے ہیں اور یہ رقم اسے نجکاری اور سرکاری املاک بیچ کر اکٹھے کرنے ہیں تاہم ابھی تک یونان اپنے ہدف سے کافی پیچھے ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔