کویتی امیر نے پارلیمنٹ کو تحلیل کر دیا

آخری وقت اشاعت:  اتوار 7 اکتوبر 2012 ,‭ 12:30 GMT 17:30 PST
کویتی پارلیمنٹ

کویتی پارلیمان میں گزشتہ کئی مہینوں سے کوئی اجلاس نہیں ہو پایا ہے

کویت کی سرکاری میڈیا نے خبر دی ہے کہ کویت کے امیر شیخ صباح الاحمد الصباح نے نئے انتخابات کی راہ ہموار کرتے ہوئے ملک کی پارلیمان کو تحلیل کر دیا ہے۔

کویت میں اسلام پسندوں کی رہنمائی والی حزب اختلاف نے پارلیمان کو تحلیل کرنے اور نئے انتخابات کرانے کا مطالبہ کرتی رہی ہیں۔

جون کے مہینے میں آئینی عدالت نے فروری میں ہونے والے انتخابات کو کلعدم قرار دیا تھا اور اس نئی پارلیمان کو تحلیل کر دیا تھا۔ ان انتخابات میں حزب اختلاف کو کافی فائدہ ہوا تھا۔

کویت میں سنہ دو ہزار چھ کے بعد سے پارلیمان کو بانچیویں مرتبہ تحلیل کیا گیا ہے۔

کویت کی پارلیمان کا کئی مہینوں سے کوئی اجلاس بھی نہیں ہو پایا ہے کیونکہ حزب اختلاف نے اس کا بائیکاٹ کر رکھا ہے۔

تمام خلیجی ممالک کے منتخب اداروں میں سے کویتی پارلیمان کو سب سے زیادہ اختیارات حاصل ہیں اور یہاں حزب اختلاف کے ارکان پارلیمان کھلے عام حکمراں الصباح خاندان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہیں۔

الصباح خاندان کو تمام اہم حکومتی اور انتظامی عہدوں پر پورا اختیار حاصل ہے۔

دو ہفتے قبل کے ایک عدالتی فیصلے میں حکومت کے انتخابی حلقوں کے حدود تدیل کرنے کے اختیار پر پر پابندی لگا دی گئی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔