اسرائیلی حملے میں دو فلسطینی ہلاک

آخری وقت اشاعت:  پير 22 اکتوبر 2012 ,‭ 11:55 GMT 16:55 PST
اسرائیلی حملے میں زخمی فلسطینی

حالیہ دنوں میں اسرائیل اور فلسطین کی سرحد پر تشدد کے واقعات میں تیزی آئی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ شمالی غزہ کی پٹی میں اسرائیل کے فضائی حملے میں دو فلسطینی شدت پسند ہلاک ہو گئے ہیں۔

اسرائیلی ملٹری کا کہنا ہے کہ انھوں نے فضا سے شدت پسندوں کو اس وقت نشانہ بنایا جب انھوں نے زمین پر گشت کرنے والی ایک اسرائیلی دستے پر مارٹر سے حملہ کیا تھا۔

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اسرائیل کا یہ گشتی دستہ غزہ کے شہر بیت الحنین میں داخل ہو گیا تھا۔

مرنے والے دو فلسطینیوں میں سے ایک کا تعلق حماس سے جبکہ دوسرے کا تعلق فلسطینیوں کی پاپولر مزاحمتی کمیٹی پی آر سی سے بتایا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ حالیہ ہفتوں میں سرحد پر تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

اسرائیلی ملٹری کا کہنا ہے کہ سوموار کو اسرائیل کے جنوبی علاقے میں غزہ سے تین راکٹ داغے گئے لیکن ان میں کسی کے ہلاک یا زخمی ہونے کی کوئی خبر نہیں ہے۔

حماس کے علاوہ دوسرے جنگجو دھڑوں نے حالیہ دنوں میں اسرائیل کے خلاف راکٹ سے حملے تیز کر دیے ہیں لیکن حال ہی میں حماس کا مصلح شبعہ بھی اس مہینے کے اوائل میں راکٹ اور مارٹر حملوں میں شامل تھا۔

اسرائیل کا کہنا ہے کہ غزہ سے ہونے والے تمام حملوں کی ذمہ داری وہ حماس پر ڈالتا ہے کیونکہ یہ علاقہ اسی کے کنٹرول میں ہے۔

یہ بات قابل غور ہے کہ تشدد کی اس لہر میں قطری امیر کے غزہ کے دورے سے ایک دن قبل تیزی آئی ہے۔

واضح رہے کہ حماس کے دو ہزار سات میں اقتدار میں آنے کے بعد یہ کسی بھی ملک کے سربراہ کا غزہ کا پہلا دورہ ہے۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔