حکومت کی حمایت واپس لی جا سکتی ہے: برلسکونی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 28 اکتوبر 2012 ,‭ 20:29 GMT 01:29 PST
برلسکونی

اٹلی کے سابق وزیراعظم سلویو برلسکونی نے وزیراعظم ماریو مونٹی کے سربراہی میں قائم ٹیکنو کریٹس کی حکومت کو گرانے کی دھمکی دی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ اس وقت کابینہ اٹلی کو پیچ دار کساد بازاری کی جانب لے جا رہی ہے اور ان کی سینٹر رائٹ جماعت پی ڈی ایل آئندہ آنے والے دنوں میں طے کریں گی کہ آیا موجودہ حکومت کی حمایت واپس لی جائے یا نہیں۔

پی ڈی ایل اس وقت پارلیمان کی سب سے بڑی جماعت ہے اور حکومت کی حمایت واپس لینے کے صورت میں ملک میں قبل از وقت انتخابات ہو سکتے ہیں۔

سابق وزیراعظم کو گزشتہ سال اپنا عہدہ چھوڑے پر مجبور کیا گیا تھا۔

اس سے پہلے برسلکونی کا کہنا ہے کہ وہ محسوس کرتے ہیں کہ انہیں سیاست میں رہنا چاہیے۔

انہیں ایک دن پہلے جمعہ کو سلویو برلسکونی کو ٹیکس فراڈ کے ایک مقدمے میں میلان کی ایک عدالت نے چار سال قید کی سزا سنائی گئی جسے بعدازاں کم کر کے ایک سال کر دیا گیا تھا۔

برسلکونی کے مطابق وہ چاہتے ہیں کہ انصاف کے نظام میں اصلاحات لائیں تاکہ جو ان کے ساتھ ہوا وہ دوسرے شہریوں کے ساتھ نہ ہو۔

اس کے بعد انہوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ وہ وزیراعظم کے عہدے کی دوڑ میں شامل ہیں۔

انہوں نے سنیچر کو ٹی جی فائیو کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ اس کے نتائج برآمد ہونگے اور میں محسوس کرتا ہو کہ وہ مجھے سیاست کے میدان میں رہنا چاہتے ہیں۔

جمعہ کو اپنی سزا کے مذمت کرتے ہوئے انہوں نے کہا تھا کہ ’یہ عدالت کی جانب سے ہراساں کرنے کی ناقابلِ برداشت کوشش‘ ہے۔

اس سے پہلے سابق وزیراعظم سلویو برلسکونی کے وکلاء کے مطابق وہ ٹیکس فراڈ کے جرم میں ملنے والی ایک برس قید کی سزا کے خلاف اپیل کریں گے۔

اطالوی ذرائع ابلاغ کے مطابق وکلاء دس نومبر تک یہ اپیل دائر کریں گے اور اس پر فیصلہ ہونے میں کئی برس لگ سکتے ہیں۔

جمعہ کو سلویو برلسکونی کو ٹیکس فراڈ کے ایک مقدمے میں میلان کی ایک عدالت نے چار سال قید کی سزا سنائی گئی جسے بعدازاں کم کر کے ایک سال کر دیا گیا تھا۔

انہیں پانچ سال کے لیے کسی بھی عوامی عہدے کے لیے نااہل بھی قرار دیا گیا ہے۔

برلسکونی اور ديگر افراد پر الزام ہے کہ انہوں نے امریکی فلم کے حقوق قیمت سے زیادہ داموں میں دو غیر ملکی کمپنیوں کے ذریعے خریدے تھے۔اطلاعات کے مطابق یہ دونوں کمپنیاں ان کےکنٹرول میں تھیں۔

واضح رہے کہ برلسکونی گذشتہ بیس برس سے اٹلی کی سیاست میں نمایاں کردار ادا کرتے رہے ہیں جبکہ اس کیس کی سماعت چھ سال قبل شرو‏ع ہوئی تھی۔

اس سے سابق وزیراعظم کو تین مختلف مقدمات کا سامنا تھا اور وہ وزارتِ عظمیٰ کا منصب چھوڑنے کے بعد پہلی بار کسی مقدمہ میں عدالت میں پیش ہوئے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔