شام میں جنگ بندی کی خلاف ورزیاں

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 27 اکتوبر 2012 ,‭ 14:41 GMT 19:41 PST

شام میں حزبِ مخالف کے کارکنوں کا کہنا ہے کہ عید الاضحیٰ کے موقع پر حکومتی افواج کی جانب سے جنگ بندی کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کئی علاقوں میں شدید گولہ باری کی گئی ہے۔

اطلاعات کے مطابق یہ گولہ باری دارالحکومت دمشق، مشرقی شہر دیر ایزور اور باغیوں کے زیرِ اثر شمالی صوبے حلب میں کی گئی ہے۔

اقوامِ متحدہ کی کوششوں سے جمعے کو شامی حکومت اور باغیوں کے درمیان عید الاضحیٰ کے موقع پر جنگ بندی کروائی گئی تھی جو جلد ہی دمشق میں ہونے والے کار بم دھماکے اور لڑائی کے باعث متاثر ہوئی تھی۔

شام میں فریقین کے مابین ہونے والی اس عارضی جنگ بندی کے پہلے روز ہی ایک سو پچاس افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔

حزبِ مخالف کے کارکنوں کے مطابق شام میں تشدد کے دوران حالیہ دنوں میں روزانہ کم سے کم ایک سو پچاس افراد ہلاک ہو رہے ہیں۔

دمشق کے نواحی علاقے دوما میں ایک کارکن نے بتایا کہ فوج نے سنیچر کی صبح سے ہی گولہ باری شروع کر دی تھی۔ محمد داؤمنی نے خبر رساں ادارے رائٹرز کو بتایا کہ’میں نے اپنے علاقے میں ایک گھنٹے میں کم سے کم پندرہ دھماکے سنے ہیں۔ مجھے جنگ بندی سے پہلے اور اب میں کوئی فرق دکھائی نہیں دے رہا۔‘

شام میں انسانی حقوق پر نظر رکھنے والے سب سے مستعد ادارے سیریئن آبزویٹری فار ہیومن رائٹس کا کہنا ہے کہ سنیچر کو اب تک آٹھ افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ ادارے کے مطابق حلب میں فوج کے جنگی طیارے بھی پرواز کر رہے ہیں۔

اس سے پہلے شام میں مسلمانوں کے مذہبی تہوار عید الاضحٰی کے موقع پر کارروائیاں روکنے پر شامی فوج اور باغیوں کے اتفاقِ رائے ہوا تھا۔ جنگ بندی کا آغاز جمعہ کو ہوا تھا۔

تاہم شامی فوج نے واضح کیا تھا کہ اگر باغیوں نے اسے نشانہ بنایا تو وہ وہ جوابی کارروائی کا حق محفوظ رکھتی ہے۔

اس جنگ بندی کی تجویز شام میں قیامِ امن کی کوششوں کے لیے اقوام متحدہ اور عرب لیگ کے ایلچی اخضر ابراہیمی نے دی تھی اور انہیں امید ہے کہ یہ ملک میں امن کی بحالی کے لیے اہم قدم ثابت ہو سکتی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔