جاپان: بم کی وجہ سے ہوائی اڈہ بند

آخری وقت اشاعت:  منگل 30 اکتوبر 2012 ,‭ 06:19 GMT 11:19 PST

سیندائی ہوائی اڈے پر آنے اور جانے والی تمام پروازیں منسوخ کر دی گئی ہیں۔

جاپان کا ایک بڑا ہوائی اڈہ اس وقت بند کر دیا گیا جب اس کے ایک رن وے کے قریب دوسری جنگِ عظیم کا ایک ان پھٹا بم پایا گیا۔

سیندائی ہوائی اڈے سے آنے اور جانے والی تمام پروازیں منسوخ کر دی گئیں اور بموں کو ٹھکانے لگانے والے ادارے کو مطلع کر دیا گیا۔

یہ ڈھائی سو کلوگرام وزنی بم امریکی ساختہ ہے۔

جنگ کے دوران یہ ہوائی اڈہ جاپانی فضائیہ کا تربیتی سکول تھا۔ اسے مارچ دو ہزار گیارہ میں آنے والے سونامی کے بعد کئی مہینوں کے لیے بند کر دیا گیا تھا۔

بم ڈسپوزل سکواڈ کی ٹیم اس بات پر غور کر رہی ہے کہ آیا بم کو منتقل کیا جائے یا اسے وہیں پر پھٹا دیا جائے۔

سیندائی پولیس کے سربراہ ہیروشی آؤچی نے کہا کہ آس پاس کے گھروں کو خالی کروانے پر غور کیا جا رہا ہے۔

سیندائی شہر کی آبادی دس لاکھ کے قریب ہے۔ یہ شہر دو ہزار گیارہ کے زلزلے کے مرکز سے بہت قریب تھا۔

جاپان کے متعدد شہردوسری جنگِ عظیم کے دوران بھاری بمباری کا نشانہ بنے تھے اور وہاں تعمیراتی کام کے دوران بم ملنا معمول کی بات ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔