امریکی کمپنی کونکورڈ حادثے کی ذمہ دار نہیں

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 30 نومبر 2012 ,‭ 00:40 GMT 05:40 PST

فرانس کی عدالت نے امریکی ہوائی کمپنی کو جولائی دو ہزار میں کانگ کارڈ جٹ کے ساتھ پیش آنے والے حادثے کی ذمہ داری سے بری کر دیا ہے۔

فرانس میں اپیل کی ایک عدالت نے امریکی ہوائی کمپنی کونٹینینٹل کو جولائی دو ہزار میں کونکورڈ جیٹ کے ساتھ پیرس میں پیش آنے والے حادثے کی ذمہ داری سے بری کر دیا ہے۔

اس سے پہلے ایک اور دعدالت نے امریکی ہوائی کمپنی کو اس حادثہ کا ذمہ دار ٹھراتے ہوئے ان پر جرمانہ لگایا تھا۔

دوسال بعد اپیل عدالت نے انہیں حادثے کی ذمہ داری سے تو بری کر دیا لیکن کہا کہ ہوائی کمپنی کی شہری ذمہ داریاں ہیں جس کے بعد شاید انہیں ہرجانہ دینا پڑے ۔

اس حادثے میں ایک سو تیرہ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

ائیر فرانس ہوائی کمپنی کا طیارہ چارلس ڈی گالی ہوائی آڈے سے اڑنے کے بعد قریب کی عمارتوں پر گر کر تباہ ہوا جس سے جہاز میں سوار ایک سو نو افراد اور زمین پر چار افراد ہلاک ہو گئے۔

جہاز میں سوار زیادہ تر مسافر جرمن سیاح تھے جو نیو یارک جا رہے تھے۔

فرانس کی ایک عدالت نے سنہ دو ہزار دس میں یہ فیصلہ کیا کہ حادثہ کونٹینینٹل ہوائی کمپنی کے جہاز کی وجہ سے ہوا۔ عدالت کے مطابق کونٹینینٹل کے ایک ڈی سی ٹین طیارے کی مرمت میں استعمال ہونے والے طیطانیم کا حصہ رن وے پر گرگیا تھا جس کی وجہ سے کونکورڈ کا ایک ٹائر پھٹا اور اس کے تیل کے ٹینک میں دھماکہ ہوا۔

عدالت نے امریکی کمپنی کو انسانوں کے غیرارادی قتل کا مرتکب قرار دیتے ہوئے انہیں دو لاکھ یورو جرمانہ کیا اور انہیں ایک ملین یورو ہرجانہ کے طور پر ائر فرانس کمپنی کو ادا کرنے کا حکم دیا۔

اس کے علاوہ جہاز کے ایک مکینک کو پندرہ ماہ جیل کی سزا بھی سنائی گئی۔

اپیل عدالت نے جمعرات کو اپنے حکم میں مکینک کی جیل کی سزا اور دو لاکھ یورو کا جرمانہ ختم کر دیا لیکن ایک میلین یورو کا ہرجانہ برقرار رکھا۔

اس کے علاوہ بھی ائر فرانس نے کونٹینینٹل پر ایک تجارتی ٹریبیونل میں پندرہ میلین یورو ہرجانہ کا دعویٰ کیا ہے۔

امریکی ہوائی کمپنی کونٹینینٹل کا موقف ہے کہ لوہے کا ٹکڑے لگنے سے پہلے ہی کونکورڈ میں آگ لگ چکی تھی۔

اس سال کونٹینینٹل ہوائی کمپنی یونائٹیڈ ائر لائن کمپنی میں ضم ہو گئی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔