’شام میں تشدد نئی بلندی کو چُھو رہا ہے‘

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 1 دسمبر 2012 ,‭ 04:51 GMT 09:51 PST

اقوامِ متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان گی مون کا کہنا ہے کہ شام میں جاری تشدد اب بے رحمی کی نئی بلندیوں کو چُھو رہا ہے۔ دوسری جانب شام میں جاری تشدد کے دوران اسی افراد ہلاک ہو گئے۔

یہ بات انہوں نے ایسے وقت کہی جب شامی افواج دمشق کے گرد و نواح میں باغیوں کے ساتھ جھڑپوں میں مصروف ہیں اور شہر کا مرکزی ہوائی اڈہ پروازوں کے لیے بند کر دیا گیا۔

اقوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا انہوں نے کہا کہ شہریوں کا روز قتلِ عام ہو رہا ہے جبکہ بڑی تعداد میں لوگ ہجرت پر مجبور ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ سال کے اوائل تک نقل مکانی کرنے والے شامی باشندوں کی تعداد سات لاکھ تک پہنچ جائے گی۔

بان گی مون نے پیشن گوئی کہ شام میں بڑھتے ہوئے تشدد کے باعث موسمِ سرما میں چالیس لاکھ افراد کو امداد کی ضرورت ہو گی۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے مطابق شام کو ایک آزاد اور جمہوری ملک بنانے کے لیے سیاسی مذاکرات کی ضرورت ہے۔

دریں اثناء شام کے لیے اقوام متحدہ اور عرب لیگ کے مشترکہ ایلچی خضر ابراہیمی نے کہا ہے کہ شام کے مسئلے کا سیاسی حل ڈھونڈنے میں ناکامی کی صورت میں شام ’ناکام ریاست‘ بن جائے گی۔

شام میں حزب اختلاف کے کارکنوں کے مطابق ملک میں جمعہ کو ہونے والے تشدد کے دوران اسی سے زیادہ افراد ہلاک ہوگئے۔

کارکنوں کے مطابق جمعہ کو حکومتی افواج اور باغیوں کے درمیان دارالحکومت دمشق کے ارد گرد شدید لڑائی ہوئی جس کی وجہ سے متعدد پروازیں متاثر ہوئیں۔

ادھر شام میں تیسرے دن بھی ٹیلی فون اور انٹرنیٹ کی سہولت معطل رہی۔

دوسری جانب امریکی وزارتِ خارجہ کی ترجمان وکٹوریہ نولینڈ نے کہا ہے کہ شام میں ٹیلی فون اور انٹرنیٹ کی سہولت معطل کرنے کی ذمہ دار شامی حکومت ہے۔ ترجمان کے مطابق شام حکومت کا یہ اقدام اس کی مایوسی کو ظاہر کرتا ہے۔

ترکی میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق حکومتی افواج نے شدید لڑائی کے بعد شہر کا مرکزی ہوائی اڈہ کھول دیا۔

شام میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے کارکنوں کے مطابق شام کے صدر بشار االاسد کے خلاف گزشتہ سال مارچ سے شروع ہونے والے مظاہروں میں چالیس ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔