اسرائیلی اعلان امن کے لیے دھچکہ ہے: امریکہ

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 1 دسمبر 2012 ,‭ 06:26 GMT 11:26 PST

امریکہ نے اسرائیل کی جانب سے مقبوضہ مشرقی یروشلم اور مغربی کنارے پر تین ہزار مکانات تعمیر کرنے کے اعلان پر تنقید کی ہے۔

امریکی وزیرِ خارجہ ہلری کلنٹن نے کہا ہے کہ اسرائیل کا اعلان مذاکرت کے لیے ایک ’دھچکا‘ ہے۔

واشنگٹن میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے امریکی وزیرِ خارجہ کا کہنا تھا کہ فلسطینیوں کو اس بات پر آمادہ کیا جائے کہ اسرائیل کے ساتھ مذاکرات کے بعد ہی آزاد فلسطینی ریاست کا قیام ممکن ہے۔

انھوں نے کہا کہ یہ بات اسرائیل کے مفاد میں تھی کہ وہ ملک کی سکیورٹی کے لیے مغربی کنارے میں نرمی کا برتاؤ کرتا، چاہے وہاں مستقبل قریب مکمل معاہدہ طے پائے یا نہیں۔

واضح رہے کہ ہلری کلنٹن نے جمعہ کی رات گئے واشنگٹن میں اسرائیلی وزیر دفاع ایہود باراک اور وزیرِ خارجہ لائیبر مین کے ساتھ ملاقات کی۔

اسرائیل کے دونوں وزراء اور فلسطین کے وزیر اعظم سلام فیاض واشنگٹن فورم میں شرکت کے لیے واشنگٹن کے دورے پر ہیں۔

اس سے پہلے اسرائیلی حکومت نے مقبوضہ مشرقی یروشلم اور مغربی کنارے پر مزید تین ہزار یونٹ تعمیر کرنے کا اعلان کیا تھا۔

اسرائیل کی جانب سے یہ اعلان اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کی جانب سے فلسطین کو غیر رکن مبصر ریاست کا درجہ دینے کے اعلان کے بعد سامنے آیا تھا۔

اس سے پہلے جمعرات کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں فلسطینی اتھارٹی کا درجہ بڑھائے جانے کی تجویز پر ہونی والی ووٹنگ میں ایک سو ترانوے ممالک میں سے ایک سو اڑتیس ممالک نے قرارداد کی حمایت میں ووٹ دیا۔

اسرائيل، امریکہ اور کینیڈا سمیت نو ممالک نے اس تجویز کے خلاف ووٹ ڈالا جبکہ اکتالیس ممالک نے اپنے ووٹ کا استعمال نہیں کیا۔

اسرائیل نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں فلسطینی اتھارٹی کا درجہ بڑھائے جانے کی تجویز پر ہونی والی ووٹنگ کو مسترد کرتے ہوئے اُسے ایک ’منفی سیاسی تھیٹر‘ قراد دیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔