افغانستان: طالبان کا امریکی اڈے پر حملہ

آخری وقت اشاعت:  اتوار 2 دسمبر 2012 ,‭ 08:03 GMT 13:03 PST

افغانستان میں اس سے پہلے بھی طالبان نیٹو افواج کے اڈوں پر حملے کر چکے ہیں

افغانستان میں حکام کے مطابق جلال آباد میں امریکہ کے فضائی اڈے پر طالبان کے حملے میں چار افغان فوجی ہلاک اور نیٹو کے متعدد اہلکار زخمی ہو گئے جبکہ نو خودکش حملہ آور بھی مارے گئے ہیں۔

افغان انٹیلیجنس کے اہلکاروں نے بی بی سی کو بتایا کہ جلال آباد میں قائم امریکی فصائی اڈے کو نو خود کش حملہ آوروں نے نشانہ بنایا جبکہ عینی شاہدین کے مطابق حملے کے وقت فائرنگ کی آواز بھی سنی گئی۔

افغان انٹیلیجنس اہلکاروں نے بتایا کہ حملہ کرنے والے نو خود کش حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا گیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ خودکش حملہ آوروں کی کارروائی کے نتیجے میں افغان فوج کے چار اہلکار ہلاک اور نیٹو افواج کے متعدد اہلکار زخمی ہو گئے ہیں۔

پولیس کے سربراہ نے بی بی سی کو بتایا کہ ہلاک ہونے والوں میں دو عام شہری بھی شامل ہیں۔

طالبان نے امریکی اڈے پر حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے اور دعویٰ کیا ہے کہ ان کے کچھ جنگجو اڈے میں داخل ہوئے تھے تاہم آزاد ذرائع سے طالبان کے دعوے کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

کابل میں موجود بی بی سی کی نامہ نگار کے مطابق یہ پہلا موقع نہیں جب طالبان نے امریکی اور نیٹو افواج کے زیرِ استمعال فوجی اڈے پر حملہ کیا ہو۔

رواں برس فروری میں ہونے والے ایسے ہی ایک حملے میں نو افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

دوسری جانب افغان حکام کا کہنا ہے کہ دو حملہ آور بارود سے بھری گاڑیوں میں آئے اور انہوں نے امریکی اڈے کے باہر سکیورٹی رکاوٹوں کو توڑا جبکہ تین حملہ آوروں نے سکیورٹی گارڈز پر حملہ کر دیا۔

مقامی افراد کے مطابق حملہ آوروں پر ہیلی کاپٹروں کے ذریعے فائرنگ کی گئی تاہم یہ لڑائی بیس منٹ تک جاری رہی۔

دریں اثناء طالبان کے ایک ترجمان نے امریکی اڈے پر ہونے والے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہےکہ طالبان کے جنجگوؤں نے اتوار کی صبح امریکی اڈے پر حملہ کیا۔

ترجمان کے مطابق امریکی اڈے پر پہلا حملہ ایک گاڑی کے ذریعے کیا گیا جس کے بعد نیٹو افواج کی وردی میں ملبوس جنگجووں کو بھیجا گیا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔