گینڈوں کے تحفظ کے لیے طیارے کا استعمال

آخری وقت اشاعت:  منگل 4 دسمبر 2012 ,‭ 15:20 GMT 20:20 PST

ایک اندازے کے مطابق جنوبی افریقہ میں اٹھارہ ہزار سفید اور سترہ سو کالے گینڈے پائے جاتے ہیں

جنوبی افریقہ کی حکومت ملک میں گینڈوں کے بڑھتے ہوئے غیر قانونی شکار کو کم کرنےکے لیے جاسوسی طیارہ استعمال کرے گی۔

اس جاسوس طیارے میں نگرانی کے آلات کے علاوہ گینڈوں کا غیر قانونی شکار کرنے والے افراد کے خاکے بھی لیے جا سکیں گے۔

جنوبی افریقہ کے حکام کے مطابق یہ طیارہ کروگر نامی نیشنل پارک کے اوپر فضائی نگرانی کرے گا۔

کروگر پارک موزمبیق کی سرحد کے قریب واقع ہے اور یہاں جنوبی افریقہ کےگینڈوں کی دو تہائی نسل آباد ہے۔

جنوبی افریقہ کے حکام کی جانب سے جاری ہونے والے اعدادوشمار کے مطابق رواں برس پانچ سو اٹھاسی گینڈوں کو غیر قانونی طور پر ہلاک کیا گیا۔

یاد رہے کہ سنہ دو ہزار سات میں جاری کیے جانے والے اعدادوشمار کے مطابق جنوبی افریقہ میں تیرہ گینڈوں کو ہلاک کیا گیا تھا۔

ایک اندازے کےمطابق جنوبی افریقہ میں اٹھارہ ہزار سفید اور سترہ سو کالے گینڈے پائے جاتے ہیں۔

گینڈے کے سینگ کی مشرق وسطیٰ میں بہت مانگ ہے جہاں اسے روایتی ادویات میں استعمال کیا جاتا ہے اور اس وجہ سے اس کے سینگ کی قیمت زیادہ ہوتی ہے۔

بین الاقوامی مارکیٹ میں گینڈے کے سینگوں کی قیمت پچانوے ہزار ڈالر فی کلو گرام ہے، جو سونے کی قیمت سے دگنی ہے۔

جانوروں کی فلاح سے متعلق بین الاقوامی فنڈ کے ڈائریکٹر جیسن بیل کا کہنا ہے کہ گینڈوں کو ان کے سینگوں کی بھاری قیمت کی وجہ سے غیر قانونی طور پر شکار کیا جاتا ہے۔ غیر قانونی شکار صرف گینڈوں تک محدود نہیں بلکہ اس میں ہاتھی اور چیتے بھی شامل ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔