ایران کی مدد، بینک معاوضہ ادا کرنے پر تیار

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 6 دسمبر 2012 ,‭ 18:03 GMT 23:03 PST

توقع ہے کہ برطانوی بینک سٹینڈرڈ چارٹر ایران پر عائد مالی پابندیوں کی خلاف ورزی کے معاملے کو حل کرنے کے لیے امریکہ میں مالی معاملات کے نگران اداروں کو تینتیس کروڑ ڈالر ادا کرے گا۔

نیویارک میں مالی خدمات کے ادارے ڈی ایف ایس نے سٹینڈرڈ چارٹرڈ پر الزام عائد کیا تھا کہ اس نے تقریباً دس سال میں ایران کے ساتھ ڈھائی سو ارب ڈالرز کے غیر قانونی لین دین کو پوشیدہ رکھا۔

بینک نے تسلیم کیا ہے کہ لین دین کے چند معاملات میں ایران پر امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی ہوئی تاہم اس نے لین دین کی کل رقم سے اختلاف کیا ہے۔

اب اس تصفیہ کے حل کے لیے توقع ہے کہ سٹینڈرڈ چارٹر بینک امریکی اداروں کو تینتیس کروڑ ڈالر کی رقم ادا کرے گا۔

بینک کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ’ بینک مکمل طور پر متحرک رہے گا اور امریکہ کے دیگر اداروں کے ساتھ ایران پر پابندیوں کی قراردار کی تعمیل کے لیے تعمیری بات چیت جاری رکھے گا۔‘

ہمیں اندازہ ہے کہ یہ بات چیت بہت جلد مکمل ہو جائے گی۔

اس وقت بینک امریکہ کے چار اداروں فیڈرل ریزرو بینک آف نیویارک، غیر ملکی اثاثوں کے کنٹرول کے ادارہ، نیویارک کے ڈسٹرکٹ اٹارنی اور محکمہ انصاف کے ساتھ بات چیت کر رہا ہے۔

رقم ادا کرنے کے باوجود بینک کو امید ہے کہ اس کا سالانہ منافع دوہرے ہندسے میں ہو گا۔

بینک کے مطابق وہ اخراجات کو قابو میں رکھنے میں کامیاب رہا ہے اور یہ بھی منافع میں اضافے کی ایک وجہ بنے گا۔

اس سے پہلے رواں سال اگست میں سٹینڈرڈ چارٹرڈ پر ایران سے غیر قانونی لین دین کے الزامات عائد کیے گئے تھے۔

نیو یارک کے حکام نے سٹینڈرڈ چارٹرڈ بینک کو ’بدمعاش ادارہ‘ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ اس نے گزشتہ سالوں کے دوران جھوٹے ریکارڈز مرتب کیے تاکہ ایران کو منی لانڈرنگ یعنی غیر قانونی طریقے سے حاصل شدہ رقوم یا آمدن کی بیرون ملک منتقلی کی روک تھام کےامریکی قوانین سے بچنے میں مدد ملے۔

امریکہ کی جانب سے سٹینڈرڈ چارٹرڈ بینک کے خلاف یہ الزامات امریکی سینیٹر کی جانب سے ایک اور برطانوی بینک ایچ ایس بی سی پر نا جائز رقوم یا آمدن کے بیرون ملک منتقلی کے روک تھام میں ناکامی کے الزامات کے ایک ہفتے بعد سامنے آئے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔