لاش کی بےحرمتی پر امریکی فوجی کو سزا

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 21 دسمبر 2012 ,‭ 06:59 GMT 11:59 PST

طالبان کی لاشوں کی بےحرمتی کی ویڈیو رواں برس جنوری میں سامنے آئی تھی

ایک امریکی میرین فوجی کو طالبان جنگجوؤں کی لاشوں پر پیشاب کرنے کے جرم میں تنزلی اور جرمانے کی سزا دی گئی ہے۔

کورٹ مارشل کی کارروائی کے دوران سٹاف سارجنٹ جوزف چیمبلن نے لاش کی بےحرمتی کا اعتراف کیا تھا۔

انہیں عہدے میں تنزلی کے علاوہ تنخواہ سے پانچ سو ڈالر جرمانہ ادا کرنے کو بھی کہا گیا ہے۔

ابتدائی طور پر انہیں تیس دن قید کی سزا دی گئی تھی لیکن استغاثہ سے سمجھوتے کی وجہ سے اب وہ جیل نہیں جائیں گے۔

طالبان کی لاشوں کی بےحرمتی کی ویڈیو رواں برس جنوری میں سامنے آئی تھی۔ امریکی میرین کور کا کہنا ہے کہ باور کیا جاتا ہے کہ یہ واقعہ ستائیس جولائی دو ہزار گیارہ کو افغان صوبے ہلمند میں ایک آپریشن کے دوران پیش آیا تھا۔

اس ویڈیو میں دکھایا گیا تھا کہ فوجی وردی میں ملبوس چار افراد تین داڑھی والی لاشوں پر پیشاب کر رہے ہیں۔ زمین پر پڑے ہوئے تین افراد میں سے ایک خون میں لت پت ہے۔

سٹاف سارجنٹ جوزف کے علاوہ اس واقعے میں ملوث دیگر تین میرینز کے خلاف اگست میں انضباطی کارروائی کی جا چکی ہے۔ ان تینوں افراد نے بھی عدالت میں اعترافِ جرم کیا تھا۔

ایک فوجی نے لاش پر پیشاب کرنے، دوسرے نے لاشوں کے ساتھ تصویر کھنچوانے جبکہ تیسرے فوجی نے غلط بیانی سے تفتیش کاروں کو گمراہ کرنے کا الزام قبول کیا تھا۔

یہ ویڈیو سامنے آنے کے بعد افغان حکومت، طالبان اور خود امریکی محکمۂ دفاع کی جانب سے اس کی شدید مذمت کی گئی تھی اور امریکی وزیرِ دفاع نے اس واقعے میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کا یقین دلایا تھا۔

.

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔