امریکہ کے جنوبی علاقوں میں برفانی طوفان

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 27 دسمبر 2012 ,‭ 13:47 GMT 18:47 PST

امریکہ کے جنوبی علاقوں میں برفانی طوفان سے چھ افراد ہلاک ہو گئے ہیں

امریکہ میں شدید سرد موسم کے باعث جنوبی علاقوں میں برفانی طوفان سے نظاِم زندگی متاثر ہوا ہے۔

خراب موسم کی وجہ سے چھ افراد ہلاک ہو گئے ہیں اور حکام نے لوگوں کو باہر نکلنے کے بحائے گھروں میں رہنے کی ہدایت کی ہے۔

طوفان کی وجہ سے مشرقی علاقوں میں بھی روز مرہ نظام زندگی کے متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

امریکی ریاست مِسیسپی اور الاباما میں بجلی کی ترسیل کا نظام متاثر ہونے کے بعد ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔

برفانی طوفان کی وجہ سے ہزاروں پروازوں کی آمدورفت معطل ہے۔ ریاست نیو یارک میں آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوارن مزید اٹھارہ انچ تک برف پڑنے کا امکان ہے اور پروازوں کی آمدورفت میں مزید تاخیر ہو سکتی ہے۔

ریاست آرکیناس کے علاقے ’لیٹل روک‘ میں تراسی سال کے بعد کرسمس کے دن برف پڑی جبکہ پڑوسی ریاست اوکلوہوما میں سات انچ برف پڑی ہے اور اوکلوہوما شہر سے باہر شاہراہ پر اکیس گاڑیاں برف میں پھنس گئی ہیں۔ .

امریکہ کے محکمہ موسمیات کے ادارے نے نیویارک اور بافیلو میں تیز ہواوں کے ساتھ شدید برف باری کی پیشن گوئی کی ہے۔

ریاست فلوریڈا میں بھی موسمیاتی وارنگ جاری کر دی گئی ہے۔

منگل کو جنوبی امریکی ریاست ٹیکسس، لیوزیانا، مسیسیپی اور الامابا میں چونتیس طوفان ریکارڈ کیے گئے ہیں۔ درخت گرنے سے ٹیکسس اور لیوزیانا میں دو افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ جبکہ اآوکلوہوما اور آرکیناس میں بھی اموات کی اطلاع ہے۔

امریکہ میں خراب موسم کے نتیجے میں اس وقت دو لاکھ افراد بجلی کی بغیر رہنے پر مجبور ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔