امریکہ:’فسکل کلف سے بچاؤ کا معاہدہ طے پا گیا‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 1 جنوری 2013 ,‭ 07:51 GMT 12:51 PST

امریکی سینیٹ میں معاہدے پر یکم جنوری دو ہزار تیرہ کی ڈیڈ لائن سے قبل ہی ووٹنگ کا امکان ہے

امریکہ سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق وائٹ ہاؤس اور امریکی سینیٹ کی اکثریتی جماعت ری پبلکنز متوسط طبقے کے لیے ٹیکسوں میں رعایت اور اخراجات میں خود کار کٹوتی سے متعلق ایک معاہدے پر متفق ہو گئے ہیں۔

تاہم اسے قانونی شکل دینے کے لیے اس کی کانگریس سے منظوری ضروری ہے۔ اس سے قبل ری پبلکن سینیٹرز نے کہا تھا کہ انہیں اس معاہدے پر غور کرنے کے لیے مزید وقت درکار ہے۔

امریکہ میں منگل کو عام تعطیل ہے اور تمام مارکیٹیں بند ہیں اس لیے معاہدہ کے قانونی شکل اختیار نہ کرنے کے فوری اثرات ظاہر ہونے کا امکان نہیں ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق اگر آئندہ چوبیس گھنٹے میں معاہدے کو حتمی شکل دے دی جاتی ہے تو یہ تاخیر بےمعنی ہو جائے گی۔

ٹیکس میں اضافے اور حکومتی اخراجات میں کٹوتی کے بارے میں سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش کے دور میں منظور ہونے والا قانون اکتیس دسمبر 2012 کو ختم ہوگیا ہے اور نئے قانون پر اتقاق نہ ہونے کی صورت میں متوسط طبقے کے لیے ٹیکسوں میں رعایت کے خاتمے اور حکومتی اخراجات میں کٹوتی کا خود کار نظام نافذ العمل ہونا ہے۔

ریپبلکنز صرف یہ چاہتے ہیں کہ امیروں کے لیے ٹیکس میں سہولتیں محفوظ رہیں: صدر اوباما

نیا قانون منظور نہ ہونے کی صورت میں چار افراد کا خاندان جس کی مشترکہ آمدن پچھتہر ہزار امریکی ڈالر ہے اسے تین ہزار تین سو ڈالر اضافی ٹیکس دینا پڑے گا۔ صدر اوباما نے اپنی انتخابی مہم کے دوران امیر امریکیوں پر مزید ٹیکس لگانے کا عہد کیا تھا

اقتصادی ماہرین کا خیال ہے کہ اس نئے نظام کی وجہ سے امریکہ ایک بار پھر کساد بازاری کی طرف لوٹ سکتا ہے اور اس سے عالمی منڈیوں پر بھی منفی اثرات مرتب ہوں گے۔

اقتصادی ماہرین کا خیال ہے کہ اگر کانگریس اور ایوان نمائندگان نے ٹیکسوں اور اخراجات میں کمی سے متعلق بل کو نئے سال کی چھٹی کے فوراً بعد منظور کر لیا تو ملک کی معیشت پر اس کے اثرات نہ ہونے کے برابر ہوں گے لیکن معاہدہ نہ ہونے کی صورت میں امریکہ ایک بار کساد بازاری کے چنگل میں پھنس سکتا ہے۔

امریکی صدر براک ریپبلیکن پارٹی سے تعلق رکھنے والے نمائندوں کو معاہدے پر جمود کا ذمہ دار ٹھہراتے رہے ہیں۔ امریکی صدر کا موقف ہے کہ ریپبلیکنز صرف یہ چاہتے ہیں کہ امیروں کے لیے ٹیکس میں سہولتیں محفوظ رہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔